News Search
Home News Dictionary TV Channels Names Weather Live Cricket Videos Photos Results Naats
Home Taza Tareen
افغان فورسز کی چمن میں بلااشتعال فائرنگ، 1 شہری شہید، 18 افراد زخمی     چمن بارڈر پر افغان فورسز کی فائرنگ، 4 ایف سی جوان زخمی، آئی ایس پی آر     راجن پور: تھانہ محمد پور کی حدود میں فائرنگ،4افراد جاں بحق 1زخمی     وزیراعظم کا ویژن پاکستان کو لوڈ شیڈنگ فری بنانا ہے، عابد شیرعلی     آخری دن میزبان بولنگ کا ہمارے پاس جواب نہ تھا، مصباح الحق     بارباڈوس:ویسٹ انڈیزکےہاتھوں پاکستان کوعبرتناک شکست     سرحد پار سے مردم شماری ٹیم پر فائرنگ، چمن سرحد بند     ’مکی‘ اور ’منی‘ حقیقی زندگی میں میاں بیوی تھے     پاناما کیس، سپریم کورٹ کا آج ہی جے آئی ٹی تشکیل دینے کا فیصلہ     پنجاب: مختلف اضلاع میں سرچ آپریشن، 41 افراد گرفتار     
Urdu News
Maulana Tariq Jamil
a
Naat Khawan
Amjad Sabri Farhan Ali Qadri
Fasih Uddin Soharwardi Ghulam Mustafa Qadri
Imran sheikh Attari Junaid Jamshed
Owais Raza Qadri Shahbaz Qamar Faridi
Syed Mohammad Furqan Qadri Ummeh Habiba
Waheed Zafar Qasmi Zulfiqar Ali
UrduWire Names Directory
Muslim Names Arabic Names
Muslim Boy Names Muslim Girl Names
Pictures Gallery
Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World
Kallar Kahar beautiful Motorway road view, Pakistan Kallar Kahar beautiful Motorway road view, Pakistan
Samzu Water Park Pictures Ticket Price 2015 & Location in Karachi Samzu Water Park Pictures Ticket Price 2015 & Location in Karachi
View all Pictures

 

Home >> Urdu News >> BBC Urdu
سائنس اور ٹیکنالوجی Share your views
شیروں سے بچاؤ کے لیے نقلی آنکھیں  [بی بی سی اردو] 19 Sep, 2016
Ben Yexley غریب کسان رات کے وقت اپنی مویشی لکڑیوں اور کانٹے دار جھاڑیوں سے بنے باڑوں میں رکھتے ہیں دس ہزار سال سے بھی زائد عرصے سے جب سے انسان نے افریقہ میں مویشوں کو خوراک کے حصول کے لیے پالنا شروع کیا ہے مگر شیر ایک بہت بڑا مسئلہ رہے ہیں۔ شیر بلکہ زیادہ تر شیرنیاں جو اصل شکاری ہوتی ہیں یہاں کے چھوٹے کسانوں کا ذریعۂ معاش تباہ کر دیتی ہیں حتٰی کہ اگر یہ ایک ہی گائے ہو جو حاملہ ہو یا دودھ دیتی ہو۔بوٹسوانا کی بہترین تحفظاتی پالیسیوں کا ہی کمال ہے کہ افریقہ کے سب سے زیادہ شیر یہاں ہیں جن کی تعداد ایک اندازے کے مطابق 3000 ہے۔ جنوبی افریقہ میں خشک موسم کی وجہ سے جنگلی حیات کے لیے محفوظ مقامات کم ہو رہے ہیں وہیں گلہ بان بھی نئی چراگاہوں کی تلاش میں ہیں۔اس کا نتیجہ یہ نکل رہا ہے کہ انسانوں اور شیروں کا آمنا سامنا بڑھ گیا ہے۔غریب کسان رات کے وقت اپنی مویشی لکڑیوں اور کانٹے دار جھاڑیوں سے بنے باڑوں میں رکھتے ہیں۔ کچھ لوگ کتے پال لیتے ہیں جو خطرہ پاتے ہیں بھونکنے لگتے ہیں۔ گو کہ بوٹسوانا میں شکار غیر قانونی ہے تاہم کچھ لوگ شیروں کو گولی مار دیتے ہیں یا زہر رکھتے ہیں۔ خشک سالی کے باعث انسانوں اور شیروں کا آمنا سامنا بڑھ گیا ہے شیروں کا تو کچھ نہیں کِیا جا سکتا تاہم کچھ اقدامات ایسے ہیں جن کی مدد سے ان کی وجہ سے ہونے والے نقصان سے بچا جا سکتا ہے۔ایک فلاحی ادارے کے ساتھ کام کرنے والے نیل جارڈن کا خیال ہے کہ انہیں اس کا ایک حل مل گیا ہے۔ایک مرتبہ انھوں نے دیکھا کہ ایک شیر 30 منٹ تک ایک ہرن کے لیے گھات لگائے بیٹھا رہا لیکن جونہی اس نے پلٹ کر شکار کو دیکھا شیر نے اپنا ارادہ بدل دیا۔ اس بات سے انہیں یہ خیال آیا کہ آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر دیکھنے نے ہرن کی جان بچا لی۔انھوں نے سوچا ’کیا اگر جانوروں کے کولہے پر پیچھے کی جانب آنکھیں پینٹ کر دی جائیں تو اس کا بھی ایسا ہی اثر ہوگا؟‘ Elsa Lijeholm ابتدا میں ان کی ٹیم نے گائے کے ایک ریوڑ کی ایک تہائی جانوروں پر آنکھیں پینٹ کیں جارڈن کا کہنا تھا ’پہلے تو میں یہ خیال بتانے سے گریزاں تھا لیکن جب ہم نے 2015 میں اس کا ایک تجربہ کیا تو اس کے نتائج کافی امید افزا نکلے۔‘ابتدا میں ان کی ٹیم نے گائے کے ایک ریوڑ کے ایک تہائی جانوروں پر آنکھیں پینٹ کیں۔نتیجہ یہ ہوا کہ شیر نے 39 میں سے تین گائے کو مارا جبکہ پینٹ کی ہوئی کوئی بھی گائے شکار نہ ہوئی۔جارڈن کہتے ہیں ’میں شرارتاً اسے ’آئی-کاؤ‘ پروجیکٹ کہتا ہوں جو ایپل کی مہنگی مصنوعات کے مقابلے میں سستا اور ٹیکنالوجی سے عاری ہے۔‘ران کراس نامی ایک مقامی کاشکار کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے دیا گیا معاوضہ ان کا نقصان پورا نہیں کر سکتا۔ Elsa Liljeholm یہ پینٹ چار ہفتوں تک برقرار رہتا ہے جس کے بعد اسے دوبارہ تازہ کر دیا جاتا ہے ان کے بقول کئی لوگ بچاؤ کے لیے شیروں کو مار دیتے ہیں لیکن چونکہ وہ شیروں کے تحفظ کے قائل ہیں اس ان کے لیے اس طریقے کو اپنانا آسان تھا۔نیل جارڈن اب اپنے اس مطالعے کو دو مزید مویشی فارمز تک بڑھا رہے ہیں جہاں وہ 60 ریوڑوں کے نصف جانوروں پر آنکھیں پینٹ کریں گے۔ اس بار وہ بہتر نتائج کے حصول کے لیے ریڈیو کالرز اور جی پی ایس لاگنگ بھی استعمال کریں گے جس کے لیے انھوں نے فنڈز اکھٹے کیے ہیں۔یہ آنکھیں بنانے کے لیے ایک فوم سے آنکھ کی شکل بنا کر اسے لکڑے کے بورڈ پر چپکایا گیا ہے اور اس کی مدد سے گائے کے کولہوں پر آنکھ کی شبیہ مہر کر دی جاتی ہے۔ یہ پینٹ چار ہفتوں تک برقرار رہتا ہے جس کے بعد اسے دوبارہ تازہ کر دیا جاتا ہے۔کئی ماہرین جارڈن کی کامیابی کے لیے دعا گو تو ہیں لیکن انہیں اس پر شکوک ہیں۔ گوشت خور جانوروں کے ماہر گس ملز کا کہنا ہے کہ شیر موقع پرست ہوتے ہیں اور وہ کئی طرح کی صورتحال سے فائدہ اٹھانا جانتے ہیں۔ Neil Jordan یہ آنکھیں بنانے کے لیے ایک فوم سے آنکھ کی شکل بنا کر اسے لکڑے کے بورڈ پر چپکایا گیا ہے اور اس کی مدد سے گائے کے کولہوں پر آنکھ کی شبیہ مہر کر دی جاتی ہے ان کا کہنا تھا کہ’یہ کیسے ممکن ہے کہ جلد ہی وہ ان آنکھوں کے بے ضرر ہونے سے آگاہ نہ ہو جائیں۔‘جنوبی افریقہ میں جانوروں کے رویوں کے ماہر اور دو دہائیوں سے شیروں کے ساتھ کام کرنے والے کیون رچرڈسن کا کہنا ہے کہ’سچ کہوں تو یہ خواہش پر مبنی خیال ہے لیکن مجھے خوشی ہو گی اگر یہ کارآمد رہا۔‘ان کا کہنا تھا ’مجھے شک ہے کہ شیر اتنے احمق نہیں ہیں جو ان نقلی آنکھوں سے بے وقوف بن جائیں۔ ہم نے ان پر تجربوں سے اخذ کیا ہے کہ وہ بہت جلد سیکھ جاتے ہیں۔ اس لیے آپ انہیں ایک مرتبہ تو بے وقوف بنا سکتے ہیں لیکن دوبارہ نہیں۔‘لیکن جارڈن کا خیال ہے کہ مویشیوں کو نشانہ بنانے والے شیر ان علاقوں کے مکین نہیں ہیں اس لیے ان کا آئے روز ان آنکھوں سے سامنا نہیں ہوگا اور وہ ان سے کنارہ کر لیں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ ’وقت ہی یہ ثابت کرے گا کہ شیر زیادہ چالاک ہیں یا ہم۔‘
View News As Image
Post Your Comments
Select Language:    
Type your Comments / Review in the space below.

Name: Email:(Will not be shown) City:
Enter The Code:

 
Home | About Us | Contact Us |  Profiles |  Privacy Policy & Disclaimer | What is Meta News?
Top Searches: Jang News Cricinfo Express Tribune,  , SSC Part 1 Results 2016   Dunya News Bol News Live Samaa News Live Metro 1 News Waqt News Hum TV PTV Sports Live KTN News
Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on "as it is" based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Please read more!

UrduWire.com - First ever Urdu Meta News portal