News Search
Home News Dictionary TV Channels Names Weather Live Cricket Videos Photos Results Naats
Home Taza Tareen
شاہ رخ خان کو بلندیوں پر پہنچانے والی معروف شخصیت چل بسی!     کیا اوباما کے بعد غیر ملکی امداد کا معاملہ غیر یقینی ہوگا؟     سائنسدانوں نے مردوں میں کینسر کی بڑی وجہ بتا دی!     اوباما کا میننگ کی قید میں کمی کے اقدام کا دفاع     امریکہ روس پر اعتماد نہیں کر سکتا: نِکی ہیلی     کمیٹی کی جانب سے بطور وزیر دفاع، میٹس کے نام کی منظوری     گورنر سندھ کی تقرری پر ایم کیو ایم پاکستان کو اعتماد میں لیا جائے: فاروق ستار کا مطالبہ     پیپلزپارٹی بلاول بھٹو کی قیادت میں کل لاہورسےفیصل آباد ریلی نکالے گی     کشمیری عوام کا مطالبہ حق خودارادیت ہے: وزیراعظم     لاہور:عمران خان اتنے کپڑے نہیں تبدیل نہیں کرتے جتنے بیان بدلتے ہیں،آصف کرمانی     
Urdu News
Maulana Tariq Jamil
a
Naat Khawan
Amjad Sabri Farhan Ali Qadri
Fasih Uddin Soharwardi Ghulam Mustafa Qadri
Imran sheikh Attari Junaid Jamshed
Owais Raza Qadri Shahbaz Qamar Faridi
Syed Mohammad Furqan Qadri Ummeh Habiba
Waheed Zafar Qasmi Zulfiqar Ali
UrduWire Names Directory
Muslim Names Arabic Names
Muslim Boy Names Muslim Girl Names
Pictures Gallery
Sindh High Court Gives Last Chance In Facebook Account Case Sindh High Court Gives Last Chance In Facebook Account Case
Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World
Kuwait starts visa issuance to Pakistanis Kuwait starts visa issuance to Pakistanis
View all Pictures

 

Home >> Urdu News >> Voice Of America Urdu
عالمی خبریں Share your views
جکارتہ کے ڈوبنے کا خطرہ، دیوار کی تعمیر کا منصوبہ [وائس آف امریکہ اردو] 10 Jan, 2017

تیزی سے ڈوبنے والے دنیا کے اس اہم شہر کو صرف سمندر کی بلند ہوتی ہوئی سطح سے ہی خطرہ نہیں ہے، بلکہ زیر زمین پانی کو نکالنے کے باعث زمین کا بتدریج دھنسنا بھی اس کا ایک سبب بن رہا ہے۔

جکارتہ کا شمار دنیا کے ان شہروں میں ہوتا ہے جو تیزی سے ڈوب رہے ہیں۔ انڈونیشیا کے اس شہر کا، جو ملک کا صدر مقام بھی ہے، 40 فی صد حصہ سطح سمندر سے نیچے ہے اور حکومت نے شہر کو ڈوبنے سے بچانے کے لیے اپنی توقعات اس بڑی دیوار سے وابستہ کر لی ہیں جس کا مقصد بندرگاہ سے پانی کا اخراج اور ساحلی علاقے کو سمندر کے مد و جزر سے بچانا ہے۔

تیزی سے ڈوبنے والے دنیا کے اس اہم شہر کو صرف سمندر کی بلند ہوتی ہوئی سطح سے ہی خطرہ نہیں ہے، بلکہ زیر زمین پانی کو نکالنے کے باعث زمین کا بتدریج دھنسنا بھی اس کا ایک سبب بن رہا ہے۔

شمالی جکارتہ میں آباد ایک سماجی گروپ کے عہدے دار گوگم محمد کا کہنا ہے کہ عمومی طور پر کنوؤں کی حالت خراب ہے۔ لیکن ہمارے علاقے کے کنوئیں بہتر حالت میں ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہمارے علاقے کے اکثر لوگ اپنی ر وزمرہ کی ضروريات پوری کرنے کے لیے ان کا پانی استعمال کرتے ہیں۔

لیکن اس کے نتیجے میں جکارتہ ہر سال 7.6 سینٹی میٹر دھنس رہا ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ ایک کروڑ دس لاکھ آبادی کے اس شہر میں لوگوں کو اپنے استعمال کے لیے زمین کے نیچے سے پانی نکالنے سے روکنا مشکل ہے۔

جکارتہ کو ڈوبنے سے بچانے کے لیے شروع کیے جانے والے مربوط منصوبے کو انڈونیشیا کے مقدس تصوراتي پرندے ’ گاروڈا‘ کے نام سے منسوب کیا گیا ہے۔ اس منصوبے کے تحت سمندر کے کنارے 24 کلومیٹر لمبی دیوار اور جکارتہ کے شمالی ساحلی علاقے کے گرد 17 مصنوعی جزیرے تعمیر کیے جائیں گے۔

ساحلی علاقے پر موجود پرانی دیوار تقربیاً 25 سینٹی میٹر سالانہ کی رفتار سے زمین میں دھنس رہی ہے۔ اسی طرح مشہور شہر وینس اندازً 38 سینٹی میٹر سالانہ کی رفتار سے زمین میں دھنستا جا رہا ہے ۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ عمارتوں اور دیواروں اور دیگر تعمیرات کے زمین میں دھنسنے کی وجہ ان علاقوں کا سیم زدہ ہونا ہے۔

جکارتہ کو ڈوبنے سے بچانے کے لیے دیوار کے تعمیری منصوبے میں انڈونیشیا، نیدرلینڈز اور جنوبی کوریا شامل ہیں۔ لیکن ملک میں جاری سیاسی تناؤ سے یہ منصوبہ متاثر ہو رہا ہے ۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ بارشوں کے ہر موسم کے بعد دیوار کی تعمیر کی ضرورت میں مزید اضافہ ہو رہا ہے۔

سن 2006 میں جاری ہونے والی اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ کے مطابق جکارتہ کی میونسپل انتظامیہ لوگوں کو ان کی ضرورت کا پانی مہیا نہیں کر پا رہی جس کے باعث لوگ اپنی ضرورت کا 75 فی صد پانی غیر قانونی کنووں سے پوری کرتے ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر افراد شمالی جکارتہ کی غریب آبادیوں سے تعلق رکھتے ہیں۔ یہی وہ علاقہ ہے جو تیزی سے زمین میں دھنس رہا ہے۔

جکارتہ کے سمندری أمور اور ماہی گیری سے متعلق وزارت کے 2015 کے ایک مطالعاتی جائزے میں بتایا گیا تھا کہ دیوار کی تعمیر ماحول پر منفی اثرات ڈال سکتی ہے، تاریخی جزائر غرق اور زیر آب چٹانیں تباہ ہو سکتی ہیں۔


View News As Image
Post Your Comments
Select Language:    
Type your Comments / Review in the space below.

Name: Email:(Will not be shown) City:
Enter The Code:

 
Home | About Us | Contact Us |  Profiles |  Privacy Policy & Disclaimer | What is Meta News?
Top Searches: Jang News Cricinfo Express Tribune,  , SSC Part 1 Results 2016   Dunya News Bol News Live Samaa News Live Metro 1 News Waqt News Hum TV PTV Sports Live KTN News
Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on "as it is" based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Please read more!

UrduWire.com - First ever Urdu Meta News portal