News Search
Home News Dictionary TV Channels Names Weather Live Cricket Videos Photos Results Naats
Home Taza Tareen
افغان فورسز کی چمن میں بلااشتعال فائرنگ، 1 شہری شہید، 18 افراد زخمی     چمن بارڈر پر افغان فورسز کی فائرنگ، 4 ایف سی جوان زخمی، آئی ایس پی آر     راجن پور: تھانہ محمد پور کی حدود میں فائرنگ،4افراد جاں بحق 1زخمی     وزیراعظم کا ویژن پاکستان کو لوڈ شیڈنگ فری بنانا ہے، عابد شیرعلی     آخری دن میزبان بولنگ کا ہمارے پاس جواب نہ تھا، مصباح الحق     بارباڈوس:ویسٹ انڈیزکےہاتھوں پاکستان کوعبرتناک شکست     سرحد پار سے مردم شماری ٹیم پر فائرنگ، چمن سرحد بند     ’مکی‘ اور ’منی‘ حقیقی زندگی میں میاں بیوی تھے     پاناما کیس، سپریم کورٹ کا آج ہی جے آئی ٹی تشکیل دینے کا فیصلہ     پنجاب: مختلف اضلاع میں سرچ آپریشن، 41 افراد گرفتار     
Urdu News
Maulana Tariq Jamil
a
Naat Khawan
Amjad Sabri Farhan Ali Qadri
Fasih Uddin Soharwardi Ghulam Mustafa Qadri
Imran sheikh Attari Junaid Jamshed
Owais Raza Qadri Shahbaz Qamar Faridi
Syed Mohammad Furqan Qadri Ummeh Habiba
Waheed Zafar Qasmi Zulfiqar Ali
UrduWire Names Directory
Muslim Names Arabic Names
Muslim Boy Names Muslim Girl Names
Pictures Gallery
Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World
Kallar Kahar beautiful Motorway road view, Pakistan Kallar Kahar beautiful Motorway road view, Pakistan
Samzu Water Park Pictures Ticket Price 2015 & Location in Karachi Samzu Water Park Pictures Ticket Price 2015 & Location in Karachi
View all Pictures

 

Home >> Urdu News >> Voice Of America Urdu
سائنس اور ٹیکنالوجی Share your views
آٹزم میں مبتلا بچوں کی زندگی بدلنے والا روبوٹ [وائس آف امریکہ اردو] 01 Apr, 2017

آٹزم میں مبتلا بچوں کے لیے کام کرنے والے ایک گروپ ٹریکس کا کہنا ہے کہ ان کے ادارے میں کاسپر کے نتائج کافی حوصلہ افزا ہیں۔

برطانیہ کی یونیورسٹی آف ہارٹفورڈ شائر نے ’ کاسپر‘کے نام سے ایک روبوٹ تیار کیا ہے جو گانے گا سکتا ہے، کھانا کھانے کی نقل کر سکتا ہے۔ دف بجا سکتا ہے، اپنے بالوں میں کنگھا کر سکتا ہے۔ اور سب سے بڑھ کر یہ کہ وہ دماغی مرض آٹزم میں مبتلا بچوں کے ساتھ کھیل سکتا ہے اور بات چیت کر سکتا ہے۔

یونیورسٹی نے یہ روبوٹ شمالی لندن میں واقع ایک اسکول کو فراہم کیے ہیں جہاں آٹزم کے بچے زیر تعلیم ہیں۔

اگر کوئی بچہ’ کاسپر ‘کو تنگ کرتا ہے یا اسے مارتا ہے تو وہ رونے کی آواز نکالتا ہے اور کہتا ہے کہ مجھے چوٹ لگی ہے۔

جب بچے کاسپر سے کھیل رہے ہوتے ہیں تو ایک نفسیاتی ماہر وہاں موجود ہوتا ہے اور ایسے موقع پر وہ بچوں کو سمجھاتا ہے کہ روبوٹ کو مارنے کی بجائے اس کے پاؤں میں گدگدی کریں۔

جب کاسپر کو گدگدی کی جاتی ہے تو وہ کہتا ہے کہ ایسا کرنا مجھے اچھا لگتا ہے۔

شمالی لندن نے اس سکول میں زیر تعلیم تقریباً 170 بچے آٹزم کے مرض میں مبتلا ہیں۔ اور کاسپر نامی روبوٹ ان بچوں کو سماجی زندگی میں ڈھالنے کے لیے مدد فراہم کر رہا ہے۔

آٹزم کے لیے کام کرنے والی ایک تنظیم نیشنل آٹسٹک سوسائٹی کے ایک اندازے کے مطابق برطانیہ میں آٹزم میں مبتلا بچوں کی تعداد تقریباً 7 لاکھ ہے۔ یہ تنظیم اتوار کے روز آٹزم کا عالمی دن منا رہی ہے اور یونیورسٹی آف ہارٹفورڈ شائر چاہتی ہے کہ اس کا روبوٹ کاسپر زیادہ سے زیادہ بچوں کی مدد کرے۔

یونیورسٹی میں مصنوعی ذہانت کے شعبے کی پروفیسر کرسٹین ڈاٹن ہان کا کہنا ہے کہ ہماری خواہش ہے کہ آٹزم میں مبتلا ہر بچے کے لیے گھر یا اسکول یا اسپتال میں ایک کاسپر موجود ہو۔

کاسپر آٹزم میں مبتلا بچوں کو معاشرے میں ضم کرنے کے لیے کتنا کار آمد ثابت ہو سکتا ہے، اس بارے میں ہارٹفورڈ کمیونٹی این ایچ ایس ٹرسٹ کے تحت دو سالہ طبی تجربات کیے جا رہے ہیں۔ ان کی کامیابی کی صورت میں برطانیہ بھر کے اسپتالوں میں آٹزم کے شعبے میں کاسپر بچوں کھیلتے کودتے اور باتیں کرتے دکھائی دیں گے۔

آٹزم میں مبتلا بچوں کے لیے کام کرنے والے ایک گروپ ٹریکس کا کہنا ہے کہ ان کے ادارے میں کاسپر کے نتائج کافی حوصلہ افزا ہیں۔ ادارے کے ایک ماہر نے بتایا کہ ہم چھوٹے بچوں کو اپنے ساتھیوں کے مل کر کھانے کی تربیت دے رہے ہیں ۔ اس سلسلے میں کاسپر کا تجربہ کافی بہتر رہا ہے ۔ بچے اسے کھلانے کی کوشش کرتے ہیں اور پھر اس طرح وہ ساتھیوں کے بھی قریب ہونے لگتے ہیں۔ ہم اس جیسے کئی اور پروگراموں پر عمل کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آٹزم میں مبتلا بچوں کو دوسرے لوگوں کے ساتھ بات کرنے اور اپنے جذبات کا اظہار کرنے میں دشواری پیش آتی ہے ۔ یہاں بھی کاسپر ان کی مدد کرتا ہے اور بچے اس سے بات چیت کرکے اپنی اس کمزوری پر آہستہ آہستہ قابو پا لیتے ہیں۔

نیشنل آرٹسٹک سوسائٹی کی ڈائریکٹر کیرل پاوی نے خبررساں ادارے روئیٹرز کو بتایا کہ آٹزم میں مبتلا بہت سے بچے ٹیکنالوجی کی جانب متوجہ ہوتے ہیں، خاص طور وہ ٹیکنالوجی جو انہیں کچھ بتائے، اس طرح یہ بچوں اور بڑوں سے رابطے کا ایک موثر ذریعہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ روبوٹ ان نئی ٹیکنالوجیز میں شامل ہے جو آٹزم میں مبتلا افراد کی زندگیوں میں بہت بڑی تبدیلی لا سکتی ہیں۔

فیس بک فورم


View News As Image
Post Your Comments
Select Language:    
Type your Comments / Review in the space below.

Name: Email:(Will not be shown) City:
Enter The Code:

 
Home | About Us | Contact Us |  Profiles |  Privacy Policy & Disclaimer | What is Meta News?
Top Searches: Jang News Cricinfo Express Tribune,  , SSC Part 1 Results 2016   Dunya News Bol News Live Samaa News Live Metro 1 News Waqt News Hum TV PTV Sports Live KTN News
Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on "as it is" based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Please read more!

UrduWire.com - First ever Urdu Meta News portal