News Search
Home News Dictionary TV Channels Names Weather Live Cricket Videos Photos Results Naats
Home Taza Tareen
آئی سی سی چمپئنز: قومی ٹیم کے 15 رکنی اسکواڈ کا اعلان     عابدشیر علی جواب دیں کہ انہوں نےمجھ سےکیاڈیل کی تھی،ڈاکٹرعاصم کاچیلنج     پہلا ٹیسٹ: پاکستان کو جیت کیلئے 32 رنز کا ہدف     چین میں مسلمان بچوں کے ”اسلامی نام“ پر پابندی عائد     منشیات کی روک تھام، عدالتی نظام میں بہتری کے لیے اقوام متحدہ کی اعانت     اسلام آباد: کتب میلےمیں اسٹیج سے گرنے والی شاعرہ فرزانہ ناز چل بسیں     سابق صدر اوباما کمیونٹی کے لیے کام کرنا چاہتے ہیں     ڈان لیکس: وزارت داخلہ کی وزیراعظم کو رپورٹ پیش کرنے کی تردید     آئونکا کا خواتین سے متعلق ٹرمپ کے رویے کا دفاع     نیویارک میں ٹیک ڈے پر نئی کمپینوں کا شو     
Urdu News
Maulana Tariq Jamil
a
Naat Khawan
Amjad Sabri Farhan Ali Qadri
Fasih Uddin Soharwardi Ghulam Mustafa Qadri
Imran sheikh Attari Junaid Jamshed
Owais Raza Qadri Shahbaz Qamar Faridi
Syed Mohammad Furqan Qadri Ummeh Habiba
Waheed Zafar Qasmi Zulfiqar Ali
UrduWire Names Directory
Muslim Names Arabic Names
Muslim Boy Names Muslim Girl Names
Pictures Gallery
Pepsi-PCB Future 11 Is Headed To Your City Check Out The Schedule ! Pepsi-PCB Future 11 Is Headed To Your City Check Out The Schedule !
Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World
Dream World Water Park Resort Hotel Ticket & Membership Price 2017 Karachi Dream World Water Park Resort Hotel Ticket & Membership Price 2017 Karachi
View all Pictures

 

Home >> Urdu News >> Voice Of America Urdu
پاکستان کی خبریں Share your views
عدالتی فیصلے پر قائدین کی طرح عوام کی رائے بھی منقسم [وائس آف امریکہ اردو] 20 Apr, 2017

فیصلے بعد سب ہی اسے اپنے اپنے موقف کی جیت قرار دیتے ہوئے فتح کا نشان بنا کر مسرت کا اظہار کرتے نظر آئے

وزیراعظم نواز شریف کے بچوں کے نام غیر ملکی اثاثے رکھنے کے پاناما پیپرز کے ذریعے انکشافات سے ٹھیک ایک سال قبل شروع ہونے والا معاملہ جمعرات کو وزیراعظم اور ان کے بچوں کے خلاف دائر درخواستوں پر عدالت عظمیٰ کے فیصلے سے بھی بظاہر ختم ہوتا دکھائی نہیں دیتا اور دونوں جماعتیں اب بھی اپنے اپنے موقف پر مضبوطی سے قائم ہیں۔

سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہا کہ عدالت کے لیے ممکن نہیں کہ وہ ان درخواستوں کی محدود دائرہ کار کے اندر وزیراعظم اور ان کے خاندان کی کاروباری سرگرمیوں اور ذاتی زندگیوں کاجائزہ لے اس لیے ایک مشترکہ تحقیقاتی ٹیم بنا کر اس کی تحقیقات کی جائیں۔

جس طرح حکمران جماعت مسلم لیگ ن اور اس کی سب سے بڑی ناقد پاکستان تحریک انصاف عدالتی فیصلے کو اپنے اپنے موقف کی فتح قرار دے رہی ہیں اسی طرح عام شہریوں کی رائے بھی عدالتی فیصلے پر منقسم دکھائی دیتی ہے۔

اسلام آباد میں ایک نجی ادارے سے وابستہ سید عمران ریاض نے وائس آف امریکہ سے گفتگو میں کہا کہ انھیں ایسے ہی فیصلے کی توقع تھی اور ان کے نزدیک وزیراعظم کو کام کرتے رہنا چاہیے۔

"ہمیں توقع تھی کہ ایسا فیصلہ نہیں آئے گا جس سے ان (حکومت) کو کچھ ہوگا کیونکہ عوام کو پتا ہے کیا ہو رہا ہے کیا نہیں ہو رہا۔ ہم تو کہتے ہیں کہ ملک میں ترقی ہونی چاہیے یہ نہیں کہ حکومت ہٹائی جائے۔"

لیکن ایک اور شہری ریاض علی طوری کا کہنا تھا کہ عدالتی فیصلہ ایسا نہیں جس کی انھیں توقع تھی۔

"بڑا شور شرابا تھا عوام بھی انتظار کر رہے تھے۔۔۔سپریم کورٹ کا فیصلہ ہے سب کو احترام کرنا ہوگا لیکن جہاں تک میرا خیال ہے (فیصلہ) عوام کی امیدوں پر پورا نہیں اترا۔ جے آئی ٹی بنے گی تو وزیراعظم تو چیف ایگزیکٹو ہیں تو کیا جے آئی ٹی خودمختار ہوگی۔ اگر سپریم کورٹ کسی فیصلے پر نہیں پہنچ سکی تو جے آئی ٹی کیسے پہنچ پائے گی۔"

فیصلے کے وقت حکومتی عہدیداروں کے علاوہ تحریک انصاف اور جماعت اسلامی کے سربراہان سمیت ان سیاسی جماعتوں کے راہنماؤں کی بڑی تعداد سپریم کورٹ میں موجود تھی جب کہ عدالت کے باہر میڈیا کے نمائندوں کا ایک جم غفیر تھا۔

فیصلے بعد سب ہی اسے اپنے اپنے موقف کی جیت قرار دیتے ہوئے فتح کا نشان بنا کر مسرت کا اظہار کرتے نظر آئے جب کہ مسلم لیگ ن کے حامیوں کی طرف سے عدالت کے باہر مٹھائی بھی تقسیم کی گئی۔

گو کہ حکمران جماعت اور تحریک انصاف نے یہ کہہ رکھا تھا کہ انھوں نے اپنے کارکنوں کو سپریم کورٹ نہ آنے کی ہدایت کر رکھی ہے لیکن اس کے باوجود دونوں ہی جماعتوں کے کچھ کارکنان یہاں موجود تھے جو ایک دوسرے کے خلاف نعرے بازی بھی کرتے رہے۔

کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے پولیس کی اضافی نفری کو سپریم کورٹ کے باہر تعینات کیا گیا تھا جب کہ شاہراہ دستور جہاں عدالت عظمیٰ سمیت دیگر اہم سرکاری عمارتیں واقع ہیں، کی طرف جانے والے راستوں پر بھی قانون نافذ کرنے والوں کی ایک قابل ذکر تعداد موجود تھی۔


View News As Image
Post Your Comments
Select Language:    
Type your Comments / Review in the space below.

Name: Email:(Will not be shown) City:
Enter The Code:

 
Home | About Us | Contact Us |  Profiles |  Privacy Policy & Disclaimer | What is Meta News?
Top Searches: Jang News Cricinfo Express Tribune,  , SSC Part 1 Results 2016   Dunya News Bol News Live Samaa News Live Metro 1 News Waqt News Hum TV PTV Sports Live KTN News
Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on "as it is" based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Please read more!

UrduWire.com - First ever Urdu Meta News portal