News Search
Home News Dictionary TV Channels Names Weather Live Cricket Videos Photos Results Naats
Home Taza Tareen
افغان فورسز کی چمن میں بلااشتعال فائرنگ، 1 شہری شہید، 18 افراد زخمی     چمن بارڈر پر افغان فورسز کی فائرنگ، 4 ایف سی جوان زخمی، آئی ایس پی آر     راجن پور: تھانہ محمد پور کی حدود میں فائرنگ،4افراد جاں بحق 1زخمی     وزیراعظم کا ویژن پاکستان کو لوڈ شیڈنگ فری بنانا ہے، عابد شیرعلی     آخری دن میزبان بولنگ کا ہمارے پاس جواب نہ تھا، مصباح الحق     بارباڈوس:ویسٹ انڈیزکےہاتھوں پاکستان کوعبرتناک شکست     سرحد پار سے مردم شماری ٹیم پر فائرنگ، چمن سرحد بند     ’مکی‘ اور ’منی‘ حقیقی زندگی میں میاں بیوی تھے     پاناما کیس، سپریم کورٹ کا آج ہی جے آئی ٹی تشکیل دینے کا فیصلہ     پنجاب: مختلف اضلاع میں سرچ آپریشن، 41 افراد گرفتار     
Urdu News
Maulana Tariq Jamil
a
Naat Khawan
Amjad Sabri Farhan Ali Qadri
Fasih Uddin Soharwardi Ghulam Mustafa Qadri
Imran sheikh Attari Junaid Jamshed
Owais Raza Qadri Shahbaz Qamar Faridi
Syed Mohammad Furqan Qadri Ummeh Habiba
Waheed Zafar Qasmi Zulfiqar Ali
UrduWire Names Directory
Muslim Names Arabic Names
Muslim Boy Names Muslim Girl Names
Pictures Gallery
Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World Cleaning The Kaaba Area - One Of The Best Jobs In The World
Kallar Kahar beautiful Motorway road view, Pakistan Kallar Kahar beautiful Motorway road view, Pakistan
Samzu Water Park Pictures Ticket Price 2015 & Location in Karachi Samzu Water Park Pictures Ticket Price 2015 & Location in Karachi
View all Pictures

 

Home >> Urdu News >> BBC Urdu
سائنس اور ٹیکنالوجی Share your views
سائنسدانوں نے چائے کا راز معلوم کر لیا [بی بی سی اردو] 02 May, 2017
چائے کا پودا

ہر قسم کی چائے کامیلیا سائنیسز نامی پودے کے پتوں سے بنتی ہے۔

نباتات کے ماہرین نے چائے کے پودے کا جنیاتی راز معلوم کر لیا ہے۔

چین میں ماہرین نےکامیلیا سائنیسز نامی اس پودے کا جنیاتی کوڈ معلوم کیا ہے جس کے پتے کالی، سبز اور گہرے رنگ کی چائے بنانے میں کام آتے ہیں۔

٭چائے، زندگی کی لہر

٭کافی ہم تک کیسے پہنچی؟

محققین نے یہ جائزہ لیا ہے کہ کون سے کیمیکلز چائے کو ذائقہ دیتے ہیں۔

چائے کے پودے کی ثقافتی اور معاشی اہمیت کے باوجود اب تک اس کی جنیات کے بارے میں بہت کم آگاہی حاصل ہوئی تھی۔

چین کے کومنگ انسٹیٹیوٹ آف بوٹنی سے وابستہ لزہی گاؤ چائے کے پودے کے بارے میں کہتے ہیں کہ 'اس کے مختلف ذائقے ہیں لیکن یہ معمہ ہے کہ چائے کے پھول کی جنیات کی بنیاد کس پر ہے۔'

کامیلیا نامی چائے ے پودوں کے گروہ کی 100 اقسام ہیں۔ ان میں باغ میں لگنے والا اس کا خوشنما پودا بھی شامل ہے۔ لیکن کامیلا سائنیسز کی کاشت کاروبار کے لیے کی جاتی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ چائے کے پودے میں بڑی مقدار میں کیمیکلز موجود ہوتے ہیں جو اسے ایک خاص ذائقہ دیتے ہیں۔ اس میں کیفین اور فلیوو نائڈذ شامل ہوتے ہیں۔

کامیلیا کی قسم سے تعلق رکھنے والے دیگرپودوں میں بھی یہ کیمیکلز موجود ہوتے ہیں تاہم ان کی مقدار نسبتاً کم ہوتی ہے۔

چائے کا پودا

ایک محقق ریسرچ کے لیے چائے کے پودے کے پتے چنتے ہوئے۔

ڈاکٹر مونیک سیمنڈز برطانیہ کے کیو رائل بوٹینک گارڈن سے منسلک ہیں۔ وہ تحقیق میں شامل نہیں تھیں تاہم ان کا کہنا ہےکہ اس تحقیق نے چائے کے جنیاتی بلڈنگ بلاک کی تفصیل فراہم کی ہے۔

بی بی سی سے گفتگو میں انھوں نے بتایا کہ اس مطالعے سے مجموعی طور پر نہ صرف ان لوگوں کو بہت فائدہ ہو سکتا ہے جو چائے کا پودا کاشت کرتے ہیں بلکہ اس سے انھیں بھی فائدہ پہنچے گا جو دوائیاں بنانے اور میک آپ کا سامان تیار کرنے کے لیے بہت سے پودوں کو اگاتے ہیں۔ چائے کے اندر موجود مرکبات اکثرکاسمیکٹس اور دوائیوں کے پودوں کی حیاتیاتی خصوصیات سے ملتے جلتے ہوتے ہیں۔'

چائے کے پودے کی ڈی کوڈنگ کے عمل میں پانچ سال سے زیادہ کا عرصہ لگا ہے۔

چائے کے پودے میں تین ارب ڈی این اے کے جوڑے ہیں۔ اور اس میں جین سمیت کروموسومز کے جوڑوں یعنی جینوم کا سائز کافی کے پودے میں موجود جینوم سے چار گنا بڑا ہے۔

چائے کا پودا

اب تک 50 قسم کے پودوں کا جنیاتی کوڈ معلوم ہوچکا ہے۔

پروفیسر گاؤ جنھوں نے 20 سے مزید پودوں کے جینوم کی ترتیب میں جنوبی کوریا اور امریکہ کے سائنس دانوں کے ساتھ کام کیا تھا، کا کہنا ہے کہ چائے کے پودے کا جینوم بہت پیچیدہ ہے۔

ماہرین کہتے ہیں کہ جنیاتی معلومات سے چائے کے پودے کی منتخب بنیادوں پر کی جانے والی کاشت کاری سے اس کی کوالٹی اور قیمت میں بہتری آئے گی۔

خیال رہے کہ کامیلیا سائنیسز سے چھ قسم کی چائے بنتی ہے۔ اس میں سفید، زرد، سبز، کالی اور گہرے رنگ کی چائے شامل ہے۔ ان سب کا اپنا ذائقہ اور خوشبو ہوتی ہے۔ اور اس فرق کی وجہ اس کی مختلف کیمیائی بناوٹ ہوتی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ 15 برس سے زائد عرصے پہلےپودے جس کی ڈی این اے کی ترتیب کے بارے میں جانا گیا تھا۔ اس وقت سے اب تک 50 قسم کے پودوں کی ترتیب کے بارے میں جانا جا چکا ہے ان میں غدائی اجناس جن میں کیلا، آلو اور ٹماٹر وغیرہ شامل ہیں۔

یہ تحقیق مالیکیولر پلانٹ نامی جنرل میں شائع ہوئی ہے۔

.


View News As Image
Post Your Comments
Select Language:    
Type your Comments / Review in the space below.

Name: Email:(Will not be shown) City:
Enter The Code:

 
Home | About Us | Contact Us |  Profiles |  Privacy Policy & Disclaimer | What is Meta News?
Top Searches: Jang News Cricinfo Express Tribune,  , SSC Part 1 Results 2016   Dunya News Bol News Live Samaa News Live Metro 1 News Waqt News Hum TV PTV Sports Live KTN News
Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on "as it is" based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Please read more!

UrduWire.com - First ever Urdu Meta News portal