ضرورت برائے سٹاف! ناسا کو نئے خلاباز درکار ہیں

بی بی سی اردو  |  Feb 15, 2020

Getty Images

خلا بازی کا خواب دنیا بھر میں بچوں سے لے کر بوڑھوں تک سبھی میں پایا جاتا ہے۔

اگرچہ گذشتہ نصف صدی سے انسان نے چاند پر قدم نہیں رکھا لیکن امریکی خلائی ایجنسی ناسا کو امید ہے کہ وہ اس صورتحال کو تبدیل کر لیں گے۔ ناسا کا منصوبہ ہے کہ وہ چاند پر قدم رکھنے والی تاریخ کی پہلی خاتون اور اگلے مرد کو 2024 تک چاند پر بھیجیں گے۔

اور اب ناسا اپنے مستقبل کے مشنز کے لیے خلاباز ڈھونڈ رہی ہے اور اس سلسلے میں درخواستیں دو مارچ سے اکتیس مارچ تک کھلی ہوں گی۔

مگر ایک خلا باز بننے کے لیے کیا کیا کرنا پڑتا ہے؟

شہریت اہم ہے

1960 کی دہائی سے اب تک ناسا نے 350 افراد کو خلابازی کی تربیت کے لیے چنا ہے اور تقریباً 48 اس وقت ایکٹیو گروپ میں ہیں۔

مگر یہ ایک امریکی ایجنسی ہے اور ناسا میں ملازمت کے لیے پہلی شرط امریکی شہریت ہے اگرچہ دوہری شہریت والے بھی ناسا کا حصہ بن سکتے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More