شرمیلا فاروقی کی زمینیوں پر قبضہ، چھڑانے سے قاصر

سماء نیوز  |  Jun 14, 2021

پیپلزپارٹی سے تعلق رکھنے والی رکن سندھ اسمبلی شرمیلا فاروقی نے انکشاف کیا ہے کہ کراچی میں ان کی زمنیوں پر بھی قبضہ کیا گیا ہے جنہیں قابضین کے چنگل سے چھڑانا ان کے بس سے باہر ہے۔

سماء کے پروگرام سات سے آٹھ میں گفتگو کرتے ہوئے شرمیلا فاروقی کا کہنا تھا کہ کراچی میں طویل عرصے تک ایم کیو ایم کا راج رہا ہے اور اسی دور شہر میں شادی ہالز اور پارکوں پر قبضہ کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ جب انتظامیہ کوئی جگہ خالی کرنے جاتا ہے تو بچے اور خواتین سڑکوں پر آجاتے ہیں کہ ہمیں بے گھر کردیا گیا اس لیے اس طرح کا کوئی بھی فیصلہ کرنے سے پہلے لوگ دس دفعہ سوچتے ہیں۔شرمیلا فارقی کا کہنا تھا کہ ہم وفاق اور سندھ میں ایم کیو ایم کے ساتھ بیٹھتے تھے مگر ہم نے اس وقت بھی بہت ساری زمینیں قبضہ مافیا سے بازیاب کرالی تھیں۔انہوں نے کہا کہ لوگوں کو متبادل جگہ دینا بھی کوئی آسان کام نہیں یہ کہنا آسان لیکن کرنا بہت مشکل ہے اور اس قسم کے گمبھیر مسائل ہر بڑے شہر میں پیش آتے ہیں۔شرمیلا فارقی کا کہنا تھا کہ گرین لائن اور کے فور منصوبے سابقہ دور حکومت میں شروع کیے گئے تھے اور انہیں مکمل کرنا وفاق کی ذمہ داری ہے۔رہنما پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ وفاقی بجٹ میں سندھ کے لیے صرف 2 منصوبے رکھے گئے ہیں مگر پنجاب کے لیے 22،خیبرپختونخوا کے لیے 21 اور بلوچستان کے لیے 15 منصوبے منظور کیے گئے ہیں۔پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما تحریک انصاف فردوس شمیم نقوی کا کہنا تھا کہ سندھ کو وفاق سے پیسے این ایف سی ایوارڈ کے فارمولے کے تحت ملتے ہیں جس میں وفاق کے ٹوٹل ٹیکس کا 14 اعشاریہ 4 فیصد حصہ ہوتا ہے اور اس رقم کو کوئی روک نہیں سکتا۔فردوس شمیم نقوی کا کہنا تھا کہ اسٹیٹ بینک مہینے میں 2 مرتبہ سندھ کو فنڈز ٹرانسفر کرتا ہے جسے وفاق نہیں روک سکتا۔انہوں نے کہا کہ پچھلے سال کرونا کی وجہ سے شارٹ فال آیا تھا جس پر سندھ حکومت اعتراض کررہی ہے مگر خود سندھ حکومت کے ٹیکسز میں بھی کمی ہوئی تھی۔رہنما تحریک انصاف کا کہنا تھا کا سندھ کی مختص رقم کوئی نہیں روک سکتا تاہم اگر اس کے علاوہ ہم کوئی ترقیاتی کام کرنا چاہیں تو اس کے لیے ہمیں سندھ حکومت سے پوچھنے کی ضرورت نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم کراچی میں گرین لائن منصوبہ اور کےفور پراجیکٹ بنارہے ہیں اس پر انہیں کیا اعتراض ہے۔پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما ایم کیو ایم خواجہ اظہارالحسن کا کہنا تھا کہ پولیس سندھ حکومت کی ماتحت ہے اگر امن کا سہرہ یہ خود کو دیتے ہیں تو قبضوں کا مسئلہ بھی اپنے سر لے۔خواجہ اظہارالحسن کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی ہمیں مافیا کہہ رہی ہے جبکہ یہ ماضی میں ہمارے اتحادی رہی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ابھی سینیٹ الیکشن کے وقت بھی پی پی رہنما ایم کیو ایم سے ملے تھے۔انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی والے ایک بار طے کرلیں کہ وہ ایم کیوایم کے دروازے پر کبھی نہیں جائیں گے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More