کم آمدن والے گھروں کے لیے انٹرنیٹ کی قیمت میں کمی کا اعلان

بول نیوز  |  May 09, 2022

بائیڈن انتظامیہ کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق انٹرنیٹ خدمات فراہم کرنے والی امریکا کی بیس بڑی کمپنیاں کم آمدن والے امریکیوں کو رعایتی قیمت پر سروسز فراہم کرنے پر متفق ہوگئیں ہیں۔

امریکی صدر جو بائیڈن اور نائب صدر کملاہیرس کی جانب سے پیش کیے گئے افورڈ ایبل کنیکٹویٹی  پروگرام کے لیے ایک کھرب ڈالر کے  انفرا اسٹرکچر پیکج کو گزشتہ سال کانگریس نے منظور کرلیا تھا۔

اس پروگرام کے تحت کم آمدن والے لاکھوں گھرانوں کو 30 ڈالر فی کس کی سبسڈی دی جائے گی، انٹرنیٹ فراہم کرنے کمپنیوں کے ساتھ ہونے والے معاہدے کے تحت 48 ملین گھرانے 100 میگا بٹس کے ماہانہ پلان پر اس سبسڈی سے مستفید ہوں گے۔

اعلامیے کے مطابق دیہی اور کم آمدن والے علاقوں میں تیز ترین انٹرنیٹ تک رسائی جو بائیڈن کی ترجیحات میں شامل ہے۔

وہ متعدد بار یہ بات کہہ چکے ہیں کہ متوسط اور غریب گھرانوں کو تیز رفتار انٹرنیٹ تک رسائی میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اور عالمگیر وبا کورونا کے دوران ان کے بچوں کو فاصلاتی تعلیم اور اپنے اسائمنٹ کو مکمل کرنے میں دشواری درپیش تھی۔

گزشتہ ماہ ڈیمو کریٹک صدر نے ’ نیشنل ٹیچرآف دی ایئر ‘ کے اعزاز میں ہونے والی تقریب میں بھی ہائی اسپیڈ انٹر نیٹ کی افادیت پر زور دیا تھا۔

مزید پڑھیں8 hours agoواٹس ایپ ایک اور زبردست فیچر متعارف کروانے میں کامیاب

واٹس ایپ پیغام رسانی کے لئے دنیا کی سب سے زیادہ استعمال...

18 hours agoڈونلڈ ٹرمپ نے ایلون مسک کو ٹوئٹر خریدنےکی ترغیب دی، سی ای او ٹرتھ سوشل

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سوشل میڈیا پلیٹ فارم کے سی...

19 hours agoموبائل فون آپریٹرز کا ایڈوانس انکم ٹیکس میں کمی کا مطالبہ

پاکستان میں موبائل فون سروسز فراہم کرنے والی کمپنیوں نے ایڈوانس انکم...

21 hours agoیوکرین جنگ کی آڑ میں جعلی خیراتی ویب سائٹس کا انکشاف

یوکرین جنگ کی آڑ میں سیکڑوں آن لائن دھوکے بازوں کا جعلی...

23 hours agoایلون مسک کو ٹوئٹر کی رقم کی ادائیگی کے لیے مزید 7 ارب ڈالرز مل گئے

کمپیوٹر سافٹ ویئر کمپنی اوریکل کے شریک بانی لیری ایلیسن، وینچر کیپیٹل...

1 day agoجعلی ویڈیوز کا ہنگامہ لیکن دراصل ڈیپ فیک ٹیکنالوجی کیا ہے؟

پاکستان تحریک انصاف کی قیادت کی کچھ غیر مناسب ویڈیوز کا اس...

تازہ ترین نیوز پڑہنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کریں بول نیوزایپ

General Rectangle – 300×250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More