محمد رضوان کو آرام دیا گیا تو سرفراز کھیلنے کے مستحق ہیں،شاہد آفریدی

بول نیوز  |  May 14, 2022

پاکستان کے سابق کپتان شاہد آفریدی کا کہنا ہے کہ اگر انتظامیہ ویسٹ انڈیز کے خلاف آئندہ ون ڈے سیریز کے لیے محمد رضوان کو آرام دینے کا فیصلہ کرتی ہے تو سرفراز احمد کھیلنے کے مستحق ہیں۔

تفصیلات کے مطابق شاہد آفریدی سے جب رضوان کے کام کے بوجھ کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ سرفراز دوسرا بہترین آپشن ہے اور اگر انہیں اسکواڈ میں لیا جاتا ہے تو انہیں موقع دیا جانا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ سرفراز  احمد کو موقع دیا جانا چاہیے اگر سلیکشن کمیٹی انہیں سیریز کے لیے منتخب کرتی ہے، اگر رضوان کو آرام دیا جاتا ہے اور سرفراز اسکواڈ میں ہوتے ہیں تو مجھے یقین ہے کہ سرفراز کھیلنے کے لائق ہیں۔

سابق کپتان نے کہا کہ میری رائے میں سرفراز دوسرا بہترین انتخاب ہے اور اگر وہ اسکواڈ کا رکن ہے تو اسے پہلے موقع دیا جانا چاہیے، مجھے یقین ہے کہ ہمیں کسی کھلاڑی کے ساتھ اس سطح کے احترام کے ساتھ پیش آنا چاہیے ۔

شاہد آفریدی نے کہا کہ محمد حارث کے لیے پاکستان سپر لیگ میں شاندار کارکردگی دکھانے کے باوجود بین الاقوامی کرکٹ میں ڈیبیو کرنا تھوڑا جلدی تھا۔

واضح رہے کہ ویسٹ انڈیز کی ٹیم پاکستان میں 8، 10 اور 12 جون کو تین ون ڈے میچز کھیلے گی۔

مزید پڑھیں52 mins agoآئی سی سی نے رمیز راجہ کی چار ملکی سیریز کی تجویز کو مسترد نہیں کیا،پی سی بی

پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) کا کہنا ہے کہ بھارت، پاکستان، آسٹریلیا...

2 hours agoپی سی بی کا ٹیسٹ اور وائٹ بال کرکٹرز کے لئے علیحدہ کنٹریکٹ پر غور

پاکستان کرکٹ بورڈ ٹیسٹ اور محدود اوورز کے کرکٹرز کے لیے مختلف...

3 hours agoمحمد حارث اور زمان خان ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز کے لئے مضبوط امیدوار

نوجوان وکٹ کیپر بلے باز محمد حارث اور تیز گیند باز زمان...

3 hours agoبحران کے باوجود سری لنکا کرکٹ بورڈ کے ساتھ ہیں، پی سی بی

پی سی بی کے میڈیا ڈائریکٹر سمیع الحسن برنی نے کہا کہ...

19 hours agoبنا سنچری کے فرسٹ کلاس میں زیادہ رنز کا عالمی ریکارڈ قائم

کاؤنٹی چمپئین شپ کے ایک میچ میں سرے نے کینٹ کے خلاف...

20 hours agoکھوٹہ سکہ کچھ نہ کرتے ہوئے بھی آئی پی ایل کا ریکارڈ بنا گیا

آؤٹ آف فارم اور تین سال سے سنچری کے قحط میں مبتلا...

تازہ ترین نیوز پڑہنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کریں بول نیوزایپ

General Rectangle – 300×250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More