عالمی ادارہ صحت کا تین سال میں پہلا بالمشافہ اجلاس اگلے ہفتے

ڈی ڈبلیو اردو  |  May 21, 2022

جنیوا میں عالمی ادارہ صحت کے صدر دفاتر والی عمارت

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے اگلے ہفتے شروع ہونے والے اس اجلاس میں  سو سے زائد ممالک کے وزرائے صحت شریک ہوں گے۔ اس اجلاس کو کورونا وائرس کی عالمی وبا کے بعد آگے بڑھنے کے ایک تاریخی موقع کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ کووڈ انیس کی وبا کے باعث اب تک دنیا بھر میں ڈیڑھ کروڑ سے زائد ہلاکتیں ہو چکی ہیں۔ اس عالمی ادارے کی اسمبلی میں متوقع موضوعات کا جائزہ:

فنڈنگ میں اضافہ

صحت کے اس عالمی ادارے کی مالی ضروریات پورا کرنے کے لیے عطیہ دہندگان نے گزشتہ ماہ ایک اہم ڈیل پر اتفاق کیا تھا۔ اس ڈیل کے تحت ڈبلیو ایچ او کے لیے لازمی مالی معاونت کو بتدریج اضافے کے ساتھ آئندہ چھ سے آٹھ بر س کے دوران کل بجٹ کے 50 فیصد تک لایا جائے گا۔ اس کے بدلے میں ڈبلیو ایچ او عطیات فراہم کرنے والے ممالک کی جانب سے پیش کردہ اصلاحات کی تجاویز کا جائزہ لے گا۔

ڈبلیو ایچ او کی سائٹ پر جموں کشمیر کہاں ہے اور بھارت کی پریشانی کیا ہے؟

اس وقت ڈبلیو ایچ او کے مجموعی بجٹ میں عطیات کی رقوم کا حصہ صرف 16 فیصد ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ یہ ادارہ اپنے بہت سے منصوبوں پر کام نہیں کر سکتا کیونکہ یہ رقوم سبھی منصوبوں کی تکمیل کے لیے کافی نہیں۔ ڈبلیو ایچ او اور ڈونر ممالک کے درمیان نئے معاہدے کی منظوری منگل 24 مئی کے روز دیے جانے کی توقع ہے۔

ٹیڈروس کا دوبارہ انتخاب

عالمی ادارہ صحت کے نئے سربراہ کے  انتخاب کے لیے خفیہ رائے دہی اسی اجلاس میں منگل ہی کے روز ہو گی۔ ووٹنگ کے نتیجے میں ایتھوپیا سے تعلق رکھنے والے اس ادارے کے موجودہ سربراہ  ٹیڈروس ایڈہانوم گیبریسس کا  دوبارہ انتخاب یقینی ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے کانگو میں تعینات عملے کے جانب سے مبینہ جنسی زیادتیوں کے معاملے پر گیبریسس کو تنقید کا سامنا بھی کرنا پڑا تھا۔ تاہم اس کے علاوہ بھی وہ چند دیگر تنازعات کا شکار رہے مگر پھر بھی دوبارہ انتخاب کے لیے فیورٹ سمجھے جاتے ہیں۔

عدم مساوات ختم کردیں تو کورونا وبا کو ختم کرسکتے ہیں،سربراہ عالمی ادارہ صحت

توقع ہے کہ ڈبلیو ایچ او کے سربراہ اپنے ادارے کے مرکزی 'تین ارب‘ نامی اہداف کا جائزہ بھی لیں گے، جن کا مقصد صحت کی سہولیات کی عالمی سطح پر فراہمی اور صحت کی ہنگامی صورتحال میں لوگوں کو بہتر تحفظ فراہم کرنا ہے۔

یوکرین

اس عالمی ادارے کی یورپی شاخ نے اسی مہینے روس کے خلاف ایک قراداد منظور کرتے ہوئے ٹیڈروس سے کہا تھا کہ وہ یوکرین میں صحت کی ہنگامی صورتحال سے متعلق ایک رپورٹ تیار کریں۔ اب  رکن ممالک روس کے خلاف ایک نئی قرارداد تیار کر رہے ہیں، جسے منظوری کے لیے آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ تاہم سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ یہ امکان نہیں کہ ایسی کسی قرارداد کے نتیجے میں روس اس ادارے میں اپنے رائے دہی کے حق سے محروم ہو جائے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More