ایف بی آئی نے انسٹاگرامر ’ہشپپی‘ کو دبئی سے ’اغوا‘ کیا: وکیل

بی بی سی اردو  |  Jul 10, 2020

Hushpuppi/Instagram
تصویر میں نظر آنے والے مسٹر ہشپپی کے وکیل کا کہنا ہے انھیں غیر قانونی طور دبئی سے اغوا کیا گیا ہے

نائجیریا کے 37 سالہ شہری رامون اولورنوا عباس کے وکیل نے الزام عائد کیا ہے کہ ایف بی آئی نے انھیں غیر قانونی طور پر دبئی سے گرفتار کیا ہے۔

رامون اولورنوا عباس پر الزام ہے کہ انھوں نے لاکھوں ڈالر کی منی لانڈرنگ کرنے کی منصوبہ بندی کی ہے۔

رامون اولورنوا عباس انسٹاگرام پر اپنے پچیس لاکھ فالورز میں ’رے ہشپپی‘ کے نام سے جانے جاتے ہیں۔ ان کے ہمراہ اوللکان جیکب پونلے المعروف ’مسٹر ووڈ بیری‘ کو بھی دبئی سے گرفتار کیا گیا ہے۔ ان پر ایک سائبر ڈاکے کا الزام ہے۔

ان دونوں افراد کو 3 جولائی کو شکاگو کی ایک عدالت میں پیش کیا گیا۔

امریکہ اور یونائٹیڈ عرب امارت کے مابین ملزمان کی حوالگی کا کوئی معاہدہ موجود نہیں ہے لیکن دبئی پولیس کا کہنا ہے کہ ان ملزمان کو امریکہ کے 'حوالے' کیا گیا ہے۔

امریکی محکمہ انصاف کے ایک ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ دبئی نے ہشپپی کو ملک سے 'بے دخل' کیا ہے 'حوالے' نہیں کیا۔ امریکی محکمہ انصاف کے ترجمان نے اس سوال کا جواب نہیں دیا کہ اگر دبئی نے انھیں ملک سے بے دخل کیا ہے تو وہ امریکہ کیسے پہنچ گئے۔

رامون اولورنوا عباس المعروف ہشپپی کے وکیل کا موقف

رامون عباس کے وکیل گال پزٹسکی نے بی بی سی کو بتایا کہ ان کے مؤکل مجرم نہیں ہیں اور انھوں نے دولت جائز طریقے سے حاصل کی ہے۔

وکیل نے کہا ’وہ ایک سوشل میڈیا انفلویئنسر ہیں جن کے لاکھوں فالورز ہیں۔ لاکھوں افراد ان سے محبت کرتے ہیں، اور وہ بھی ان سے محبت کرتے ہیں۔ یہ ہی وہ کرتے تھے۔ آج کل اسی کا زمانہ ہے، اب یہ کاروبار ہے۔‘

وکیل گال پزٹسکی نے تسلیم کیا کہ وہ سوشل میڈیا سے سو فیصد واقف نہیں ہیں اور ان کے بچے سمجھتے ہیں کہ وہ بہت بوڑھے ہیں۔ انھوں نے کہا لوگ اسی طریقے سے پیسے کما رہے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More