نیوجرسی: مختصر بل پر بھاری ٹپ نے ویٹرز کو رلادیا

سماء نیوز  |  Jul 12, 2020

امریکی ریاست نیو جرسی کے ایک ریسٹورنٹ کا اسٹاف جو کرونا وائرس کی وباء کے باعث معاشی مسائل سے دوچار ہے اس وقت آبدیدہ ہوگیا جب ایک فیملی ہلکا پھلکا ناشتہ کرکے خاموشی سے بل سے 23 گنا زائد ٹپ دے گئی۔

کی ایک خبر کے مطابق ساحلی قصبے اوشین گروو کے ایک ریسٹورنٹ میں ایک گاہک نے 43 امریکی ڈالر مالیت کے بل کے علاوہ اسٹاف کیلئے ایک ہزار ڈالر کی ٹپ بھی دی جس کا مقصد ایسے نامساعد حالات میں ان کی مدد کے ساتھ ان کی کاوشوں کا اعتراف کرنا تھا۔

ریسٹورنٹ کے مالک آرنلڈ تیشیرا کا کہنا تھا کہ بل دینے والے صاجب اور ان کے اہل خانہ ریسٹورنٹ کے مسقل گاہک ہیں اور وہ وہاں سن 2001ء سے آرہے ہیں۔ انہوں نے گاہک کا نام بتانے سے گریز کرتے ہوئے مزید بتایا کہ وہ بغیر کچھ کہے بل کے پیسوں کے ساتھ بھاری ٹپ رکھ گئے۔

جب ایک خاتون ویٹر نے وہاں سے بل کے پیسے اٹھائے تو ساتھ میں ٹپ کی اتنی کثیر رقم دیکھ کر رونا شروع کردیا اور جب بقیہ اسٹاف اور مالک کو معاملے کا پتہ چلا تو ان وہ سب بھی اپنے آنسو ضبط نہ سکے۔

آرنلڈ کا کہنا تھا کہ گاہک کے ایثار کے باعث وہ سب اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ سکے کیوں کہ اس وقت وہ تمام ایک بیحد کٹھن دور سے گزر رہے ہیں۔

یہ واقعہ گزشتہ ہفتے کا ہے اور اس دن اس گاہک کی شادی کی 21 ویں سالگرہ تھی جسے منانے کیلئے انہوں نے وہاں ناشتہ کیا اور بھاری ٹپ بھی دے گئے۔

جاتے وقت اس فیملی نے کوئی بات تو نہیں کی تاہم پیسوں کے ساتھ ایک تحریر چھوڑ گئے جس میں انہوں نے کرونا وائرس کی وباء کے دوران کام جاری رکھنے پر اسٹاف کا شکریہ ادا کرتے ہوئے لکھا کہ لذیذ غذا، عمدہ ماحول اور ہمارے لئے اپنے لبوں پر گرمجوش مسکراہٹیں سجانے پر ہم آپ سب کے بیحد ممنون ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ موسم گرما ہمارے لئے آپ کے ریسٹورنٹ کے بغیر اتنا خوشگوار نہیں ہوسکتا تھا۔

اس نوٹ کے آخر میں یہ لکھا تھا کہ ہزار ڈالر کی یہ ٹپ تمام اسٹاف میں مساوی تقسیم کردی جائے۔ ریسٹورنٹ کے مالک نے بتایا کہ ان کے ہاں کل 7 ملازمین ہیں جن میں انہوں نے وہ رقم بانٹ دی اور خود کوئی حصہ نہیں رکھا۔

آرنلڈ کا کہنا تھا کہ جب وباء کے باعث مارچ میں انہوں نے اپنا ریسٹورنٹ بند کردیا تھا تب انہیں اس بات کا یقین نہیں تھا کہ وہ اپنا کاروبار دوبارہ کھول سکیں گے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ معاملات اتنے خراب ہوتے رہے کہ ایک موقع پر میں اس بات کیلئے ذہنی طور پر تیار ہوگیا تھا کہ اب ہمارا ریسٹورنٹ کبھی نہیں کھل سکے گا اور اب بھی ہمارا کاروبار پہلے کی نسبت آدھا بھی نہیں چل پا رہا۔

ریسٹورنٹ مالک نے کہا کہ اس ٹپ نے انسانیت پر ہمارا اعتماد بحال کردیا ہے اور ہمیں اپنے کام پر خوشی محسوس ہورہی ہے۔ ہم اپنے گاہکوں کیلئے بہت محنت کرتے ہیں اور بیحد تھک بھِی جاتے ہیں لیکن اب ہمیں اندازہ ہوا کہ ہماری کاوشوں کو نوٹ کیا جاتا ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More