سعودی عرب اپنے جوہری پروگرام کو مانیٹرنگ کے لئے کھولے،اسلامی ملک نے مطالبہ کردیا

روزنامہ اوصاف  |  Aug 09, 2020

تہران (ویب ڈیسک )ایران نے سعودی عرب سے، اپنے جوہری پروگرام کو بین الاقوامی ایٹمی انرجی ایجنسی کی مانیٹرنگ کے لئے کھولنے کی، اپیل کی ہے۔ایران کے بین الاقوامی ایٹمی انرجی ایجنسی کے لئے مستقل نمائندے کاظم غریب آبادی  نے کہا ہے کہ سعودی عرب خفیہ اور شفافیت سے عاری جوہری کاروائیوں کو جاری رکھے ہوئے ہے۔غریب آبادی نے کہا ہے کہ ریاض انتظامیہ  جوہری اسلحے کے سدباب کے سمجھوتے کی فریق ہے اور اس نے بین الاقوامی ایٹمی انرجی ایجنسی کے ساتھ جامع سکیورٹی سمجھوتہ کر رکھا ہے لیکن اس کے باوجود ایجنسی کی حفاظتی تدابیر کو قبول کرنے کی یقین دہانی کروانے سے گریزاں ہے اور ایجنسی کے اصرار کے باوجود مانیٹرنگ کی اجازت نہیں دے رہی۔غریب آبادی نے بین الاقوامی ایٹمی انرجی ایجنسی اور بین الاقوامی برادری سے ریاض انتظامیہ کے خفیہ جوہری پروگرام کو منظر عام پر لانے کی اپیل کی ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ سعودی عرب جوہری توانائی کو پُر امن مقاصد کے لئے استعمال کرنے کا خواہش مند ہے تو اسے ایجنسی کی متعلقہ شرائط کو قبول کرنا  چاہیے اور مکمل طور پر شفاف کاروائیاں کرنی چاہئیں۔واضح رہے کہ امریکی روزنامے وال اسٹریٹ جنرل نے 4 اگست کی اشاعت میں شائع کردہ خبر میں لکھا تھا کہ سعودی عرب نے مدینہ کے شمالی شہر العلی میں چین کے تعاون سے ایک خفیہ تنصیب تعمیر کی ہے جسے یورینئیم کی کان سے ییلو کیک  نکالنے کے لئے استعمال کیا جائے گا۔اس کے جواب میں سعودی عرب کی وزارت توانائی نے جاری کردہ بیان میں اس خبر کی تردید کی تھی۔
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More