اسٹیٹ بینک نے پالیسی ریٹ میں تبدیلی کر کے طلب کو کم کیا ہے، گورنر اسٹیٹ بینک

بول نیوز  |  Sep 22, 2021

گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر کا کہنا ہے کہ اسٹیٹ بینک نے پالیسی ریٹ میں تبدیلی کر کے طلب کو کم کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر نے لیڈرز ان اسلام آباد سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے کورونا کو قابو پایا گیا ہے، ہم نے کورونا بحران پر بہتر قابو پایا ہے۔

رضا باقر نے کہا ہے کہ دنیا کے مقابلے میں پاکستان میں کورونا کیسز کی رفتار کم ہے، پاکستان میں کورونا کے دوران تیزی سے لوگوں کو نقد مدد دی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کاروباری برادری اور لوگوں کو دو ٹریلین کے قرضے دیئے گئے، 430 ارب روپے نئی سرمایہ کاری کے لیے دیئے گئے اور 240 ارب روپے کے سستے قرضے دیئے گئے، کاروباری برادری کو ملازمین کی نوکریوں سے نکالنے کے لئے نہیں کہا گیا۔

رضا باقر نے کہا کہ معیشت میں بحالی ہوئی ہے، معاشی شرح نمو منفی سے چار فیصد ہوئی ہے، اس کا مطلب ہے کہ لوگوں کی آمدن میں چار فیصد اضافہ ہوا ہے، ڈھائی سالوں میں قرضوں کی شرح بلحاظ جی ڈی 86 فیصد سے کم کرکے 83.5 کیا گیا، ترسیلات زر میں جون 2021 کو ختم ہونے والے سال کے دوران 27 فیصد اضافہ ہوا، رواں مالی سال بھی اضافے کی شرح برقرار ہے۔

گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ روش ڈیجٹیل اکاؤنٹس میں 2 لاکھ 40 ہزار بیرون ملک مقیم پاکستانی اپنے اکاؤنٹس کھول چکے ہیں، اس میں 2.3 قرب ڈالر آچکے ہیں یومیہ ایک ہزار تارکین وطن یومیہ اکاؤنٹ کھلوا رہے ہیں،  ہمارا ایکسچینج ریٹ مارکیٹ بیس ہے۔

رضا باقر نے کہا کہ خدشہ ہے کہ پاکستان سے ڈالر افغانستان اسمگل ہورہے ہیں، افغانستان کے اکاؤنٹس دنیا نے منجمد کئے ہیں جس کی وجہ وہاں معاشی انحطاط ہے، بارڈر پر ایکسچینج مارکیٹ میں ڈالرز کی بڑی مقدار دستیاب نہیں ہے۔

گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر نے مزید کہا کہ پاکستان کو اس نگرانی اور لاء انفورسمنٹ ایجنسیز کو اس پر کام کرنا چاہیے، کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھنے سے روپے کی قدر میں کمی ہوئی ہے۔

Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More