سردیوں میں موزے پہن کر سونا صحت کےلئے کیسا ہے؟

بول نیوز  |  Oct 17, 2021

سرد موسم کے دوران سردی سے بچاؤ کے لیے موزے پہن کر سونا عام بات ہے یہ انسان کو پرسکون نیند لینے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں مگر اس عمل سے صحت پر خطرناک منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔

طبی ماہرین کے مطابق موزے پہن کر سونا صحت مندانہ طرز عمل نہیں ہے، موزے پہن کر سونے سے نیند کے دوران، مجموعی صحت پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں جن میں نیند میں خلل پڑنا، بلڈ پریشر کا بڑھ جانا اور تنگ موزے پہننے کے باعث جلد پر انفیکشن کا ہو جانا شامل ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق موزے پہن کر سونے کے نتیجے میں صحت سے متعلق مندرجہ ذیل 4 شکایات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

ہائی بلڈ پریشر 

 موزے پہن کر سونے سے بلڈ پریشر بڑھ جاتا ہے جس کا براہ راست اثر دل پر پڑتا ہے، نیند کے دوران بلڈ پریشر کا بڑھنا صحت کے لیے منفی ثابت ہوتا ہے۔

ماہرین کے مطابق اگر سونے سے قبل موزے کافی وقت پہلے سے پہنے ہوئے ہیں تو پھر انہیں اتارے بغیر سویا جا سکتا ہے ۔

پاؤں کی صحت خراب ہو سکتی ہے  

پاؤں بھی انسانی جسم کا اہم حصہ ہوتے ہیں، جنہیں سب سے زیادہ نظر انداز کیا جاتا ہے اور  پاؤں کی صحت اور ان کی صفائی پر توجہ نہیں دی جاتی۔

پاؤں کی جلد پر موجود مساموں کو بھی تازہ ہوا کی ضرورت ہوتی ہے جبکہ موزے پہن کر سونے کے دوران مسام بند ہو سکتے ہیں جس کے نتیجے میں پاؤں کی صفائی اور صحت سے متعلق شکایات جنم لیتی ہیں۔

پاؤں کی جلد پر انفیکشن ہو سکتا ہے 

سونے سے قبل موزے پہننے کی عادت جلد کے لیے اچھی ثابت نہیں ہوتی، اکثر خواتین و مرد ایڑیوں کو پھٹنے سے بچانے کے لیے رات سونے سے قبل پیٹرولیم جیل لگا کر پھر موزے پہن کر سوتے ہیں۔

 روزانہ کی بنیاد پر ایک ہی موزوں کی جوڑی کا استعمال جلد پر باآسانی انفیکشن کا سبب بن سکتا ہے جبکہ رات سونے سے قبل پیٹرولیم جیل (کریم) لگا سکتے ہیں مگر اُن پر گندے موزے پہننا سنیگن جلد کا انفیکشن کر سکتا ہے۔

جسم کا درجہ حرارت بڑھ سکتا ہے 

موسم سرما میں ٹھنڈ سے بچنے کے لیے لحاف اور ہیٹر کا استعمال کرنا مناسب ہے مگر رات کے دورانیے میں موزے پہن کے سونے سے جسم کا درجہ حرارت ضرورت سے زیادہ بڑھ سکتا ہے جس کے نتیجے میں نیند میں خلل اور دن میں بے چینی جیسی شکایت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

واضح رہے رات سونے سے ایک گھنٹہ قبل اپنے پاؤں پر گرم موزے پہن لیں جب پاؤں کا درجہ حرارت نارمل ہو جائے تو موزے اتار کر پاؤں لحاف میں لپیٹ کر سو جائیں۔

Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More