ملک کے قرضے میں 2750 ارب کا اضافہ ہو گیا ہے، رضا ربانی

بول نیوز  |  Oct 27, 2021

سابق چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کا کہنا ہے کہ ملک کے قرضے میں 2750 ارب کا اضافہ ہو گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سابق چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ حکومت نے کے الیکٹرک کے نرخ میں 69 پیسے کا اضافہ کردیا ہے، یہ عام آدمی پر مزید بوجھ ہے جو پہلے ہی مشکل سے بچوں کی کفالت کررہا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ روپے کی قدر میں تاریخی کمی ہو رہی ہے اور اب روپے کی قیمتوں 175 روپے 27 پیسے فی ڈالر تک گر چکی ہے، مئی سے اب تک روپے کی قدر میں 23 روپے کی کمی ہوئی ہے، روپے کی قدر میں کمی سے ملک کا قرضہ مزید بڑھ گیا ہے۔

سابق چیئرمین سینیٹ کا کہنا ہے کہ ملک کے قرضے میں 2750 ارب کا اضافہ ہو گیا ہے، پھر بھی گورنر اسٹیٹ بینک کہتے ہیں کہ یہ کچھ لوگوں کے لیے فائدے مند ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ دباؤ آئی ایم ایف سے مزاکرات کے ذریعے آیا، حکومت آئی ایم ایف مزاکرات کے حوالے سے پارلیمنٹ کو اعتماد میں لینے میں ناکام رہی، آئی ایم ایف مزاکرات میں غیر یقینی نے معیشت کی رفتار سست کردی ہے۔

میاں رضا ربانی نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف چاہتا ہے کہ پاکستان لیکویڈیٹر کے طور پر اسکا کردار منظور کرے، حکومت فوری طور پر اس معاملے پر عوام کو اعتماد میں لے۔

سابق چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے مزید کہا ہے کہ آئی ایم ایف کی بعض شرائط ہیں کہ قومی سلامتی پر اثرات ہوں گے، ریلوے کے کرائے میں اضافے کی مذمت کرتے ہیں اسے فوری واپس لیا جائے۔

Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More