دیارِغیرمیں پاکستانی ڈرائیورنےدل جیت لیا

بول نیوز  |  Jan 13, 2020

پاکستانی ٹیکسی ڈرائیورنےدبئی میں بھارتی طالبہ کی مدد کرکےایمانداری کی بہترین مثال قائم کردی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق گزشتہ ہفتے دبئی میں راشیل روز نامی بھارتی طالبہ برطانیہ سے چھٹیاں گزارنے اپنے والدین کے پاس آئی ہوئی تھیں، وہ اپنی سالگرہ منانے دوستوں کے ساتھ باہر گئیں جہاں سے واپسی پر ٹیکسی میں اپنا پرس بھول گئیں۔

بھارتی طالبہ نےجس ٹیکسی میں سفرکیاتھااس کا ڈرائیور ایک پاکستانی لڑکا تھا جس کا نام مدثر تھا۔

مدثرنے کئی گھنٹوں کی تلاش کے بعد راشیل کاپرس اسے واپس لوٹا دیا۔

اس واقعے کے حوالے سے بھارتی طالبہ راشیل روزکا کہنا تھا کہ وہ اپنے دوستوں کے ساتھ تھیں اور جلدبازی میں پرس ٹیکسی میں ہی بھول گئیں جس میں ان کا برطانیہ کا ویزا سمیت رہائش کا پرمٹ کارڈ، اسٹوڈنٹ ویزا، متحدہ عرب امارات کا سٹیزن شپ کارڈ، ڈرائیونگ لائسنس سمیت دیگر اہم دستاویزات کے ساتھ ساتھ ایک ہزار درہم شامل تھے۔

راشیل کے مطابق اپنے اتنے قیمتی کاغذات ٹیکسی میں بھول آنا بے حد پریشانی کی بات تھی، میرے پاس ان دستاویزات کی کوئی کاپی بھی نہیں تھی جب کہ میرے والدین اس وجہ سے مجھ سے بے حد ناراض بھی تھے۔

ٹیکسی میں انتہائی اہم دستاویزات کھونے کے بعد بھارتی طالبہ نے فوری پولیس کو اطلاع دی تھی کیونکہ اگلے ہی دن انہیں برطانیہ جا کر امتحان بھی دینا تھا۔

دوسری جانب اس حوالے سے پاکستانی ڈرائیور مدثر خادم نے کہا کہ لڑکی کو چھوڑنے کے بعد انہوں نے 2 اور رائڈز بھی لی تھیں جس کے بعد انہیں معلوم ہوا کہ کوئی اپنا پرس بھول گیا ہے۔

مدثر کے مطابق انہوں نے فوراً پرس کھول کر معلومات حاصل کرنے کی کوشش کی تاکہ معلوم ہوسکے کہ پرس کس کا ہے۔

بعد ازاں مدثر نے پولیس اسٹیشن سے رابطہ کیا لیکن وہ پولیس اسٹیشن جا کر بھی مایوس ہی ہوئے کیونکہ انہیں وہاں لڑکی کو ڈھونڈنے میں کوئی خاص مدد نہیں مل سکی تھی۔

ڈرائیورنے مزید بتایا کہ اپنی ڈیوٹی ختم کرکے گھر جانے ہی والا تھا کہ انہیں ایک ڈیپارٹمنٹ سے کال آئی جس کے بعد انہیں راشیل کا نمبر اور اس کے گھر کا پتہ دیا گیا جہاں اس نے وہ پرس لوٹا دیا۔

مدثر نے کہا کہ بھارتی لڑکی کے والد پرس لوٹانے پر بہت خوش ہوئے اور انعام کے طور پر اسے 600 درہم دینے کی پیشکش کی مگر انہوں نے لینے سے منع کر دیا تھا۔

بھارتی ریاست کیرالہ سے تعلق رکھنے والے بھارتی خاندان نے امارتی ایجنسی کو ایک خط بھی لکھا جس میں انہوں نے پاکستانی ڈرائیور مدثر خادم کی ایمانداری کی تعریف کی۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More