جاوید اختر نے نریندر مودی کو فاشسٹ سوچ کا حامل قرار دے دیا

وائس آف امریکہ اردو  |  Feb 14, 2020

ویب ڈیسک — 

بھارت کے معروف شاعر اور کہانی نگار جاوید اختر نے وزیراعظم نریندر مودی کو فاشسٹ قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اس سوچ کے حامل افراد کے سر پر سینگ نہیں ہوتے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک اور بھارتی ہدایت کارمہیش بھٹ کے ہمراہ ایک عرب نشریاتی ادارے الجزیرہ کو دیے گئے ایک انٹرویو میں کیا۔

جاوید اختر کا یہ بھی کہنا تھا کہ فاشسٹ ایک "سوچ" ہے اور یہ سوچنا کہ ہم دوسروں سے بہتر ہیں اور جو بھی مسائل ہیں وہ دوسروں کی وجہ سے ہیں، یہ فاشزم ہے۔ اگر آپ لوگوں کی اکثریت سے نفرت کرتے ہیں تو سمجھیں آپ فاشسٹ ہیں۔

دوسری جانب ایک سوال کے جواب میں مہیش بھٹ کا کہنا تھا کہ نائن الیون کے بعد دنیا بھر میں اسلامو فوبیا کی ہوائیں چلیں۔ لیکن میرا خیال ہے کہ ہمارے یہاں فوبیا کا ہوا کھڑا کیا گیا ہے۔ لیکن عام بھارتی شہری مسلمانوں سے خوفزدہ نہیں ہے۔

مہیش بھٹ نے مزید کہا کہ "مسلمانوں سے متعلق خوف کی فضا قائم کرنے کے لیے ہر وقت کام ہو رہا ہے۔ خوف دلانے کے لیے باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت کام ہو ہو رہا ہے۔"

اُنہوں نے کہ نفرت کو ہوا دینے کے لیے من پسند افراد کو ذرائع ابلاغ میں جگہ دی جاتی ہے۔ اقتدار برقرار رکھنے کے لیے ایک منظم مہم چلائی گئی۔

بھارت کی فلم انڈسٹری سے منسلک مسلمان فن کار بھارتی حکومت کی جانب سے گزشتہ سال نافذ کیے جانے والے شہریت ترمیم بل پر تحفظات کا اظہار کرتے رہتے ہیں۔

اس سے قبل بالی وڈ اداکار نصیر الدین شاہ نے بھی شہریت ترمیمی بل پر تنقید کرتے ہوئے اسے مسلمانوں کے خلاف امتیازی قانون قرار دیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More