ماسک پہننے کی تلقین کرنیوالا بس ڈرائیور تشدد سے ہلاک

سماء نیوز  |  Jul 11, 2020

فرانس میں مسافروں کو ماسک پہننے کا کہنے والا بس ڈرائیور شدید تشدد سے ہلاک ہوگیا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق اتوار 5 جولائی کو ایک فرانسیسی بس ڈرائیور نے چند نوجوانوں کو بس میں سوار ہونے پر ماسک پہننے کی تلقین کی جس پر بات لڑائی تک پہنچ گئی، نوجوانوں نے ڈرائیور کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا، جسے نیم مردہ حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق کئی روز وینٹی لیٹر پر رہنے کے بعد جمعہ کو بس ڈرائیور ہلاک ہوگیا۔ ڈاکٹرز کے مطابق اسے برین ڈیڈ حالت میں اسپتال لایا گیا تھا اور مصنوعی طریقے سے سانس فراہم کیا جارہا تھا۔

فرانس کے 59 سالہ بس ڈرائیور فلپ مونگیو کے اہل خانہ نے ڈاکٹرز سے مشورے کے بعد انہیں مشینوں سے ہٹانے کا فیصلہ کیا تھا۔

مونگیو کی بیٹی میری نے مقامی میڈیا سے بات چیت میں بتایا کہ ہم نے طے کیا کہ انہیں جانے دیا جائے، ڈاکٹر بھی اسی کے حق میں تھے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ڈرائیور کو تشدد کا نشانہ بنانے کے الزام میں 2 افراد پر اقدام قتل کے الزام کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے، جبکہ دیگر 2 کو کسی شخص کو خطرے میں ڈالنے میں معاونت کے الزام کا سامنا ہے، اس کے علاوہ ایک شخص پر ایک ملزم کو چھپانے کا الزام عائد ہے۔

مقامی دفتر استغاثہ کے مطابق اقدام قتل کے الزام کا سامنا کرنے والے 2 ملزمان کی عمریں بائیس اور تئیس برس ہیں، مونگیو کے انتقال کے بعد الزامات میں تبدیلی پر غور کیا جارہا ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More