ایبٹ آباد میں کرکٹ جنون، ویڈیو سوشل میڈیا پر مقبول  شعیب اختر بھی گن گانے لگے

شمع نیوز  |  Aug 09, 2020

ایبٹ آباد (این این آئی) سوشل میڈیا پر ایبٹ آباد کے ایک گاؤں نکرموجوال میں منعقد کرکٹ میچ کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر زیر گردش ہے جس میں پاکستانیوں کا کرکٹ جنون صحیح معنوں میں نظر آرہا ہے۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر صحافی شاکر عباسی نامی صارف نے ویڈیو شیئر کی جس میں مقامی لوگوں کو عید کے موقع پر ہونے والے کرکٹ میچ کھیلتے دیکھا گیاانہوں نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہ میں یہاں ایک ایسا منفرد گراؤنڈ دکھانے جا رہا ہوں جو آپ نے پہلے کبھی نہیں دیکھا ہوگا۔ اپنے ٹوئٹ میں انٹرنیشنل کرکٹ کونسل

(آئی سی سی) کو ٹیگ کرتے ہوئے انہوںنے لکھا کہ یہ ویڈیو آخر تک لازمی دیکھیں تاکہ آپ کو پاکستانیوں کے کرکٹ کے لیے جذبات کا پتہ چل سکے۔شاکر عباسی کی جانب سے شیئر کردہ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مقامی سطح پر ایک میچ کھیلا جارہا ہے جس میں کھیلنے والی ٹیم کو 3 گیندوں پر 4 رنز چاہیں اور آخر میں بیٹسمین چوکا لگا کر میچ اپنے نام کرلیتا ہے۔میچ کے فیصلے کے بعد دور پہاڑیوں پر میچ سے لطف اندوز ہونے والے کرکٹ شائقین جیتنے والی ٹیم کو مبارکباد دینے اور خوشی منانے جبکہ ہارنے والی ٹیم کے سپورٹرز بھاگتے دوڑتے میچ کے مقام پر پہنچتے ہیں اور خوشی کا اظہار مقامی انداز میں کرتے ہیں۔صارف نے لکھا کہ ایسا نظارہ کرکٹ شائقین نے پہلے کبھی نہیں دیکھا ہوگا۔سوشل میڈیا پر یہ ویڈیو بڑی تعداد میں شائقین کرکٹ کی جانب سے شیئر کی جارہی ہے، ویڈیو شیئر کرنے والوں میں اور اسے وائرل کرنے میں مشہور و معروف شخصیات بھی شامل ہیں جنہوں نے اپنے جذبات کا اظہار کرتے ہوئے تبصرہ کیا۔قومی کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ باؤلر شعیب اختر نے لکھا کہ میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ ایسا کرکٹ گراؤنڈ اور کرکٹ کے لیے ایسا جنون آپ نے پہلے کبھی نہیں دیکھا ہوگا۔رمیز راجہ نے بھی اس ویڈیو کو شیئر کیا۔وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد حسین چوہدری نے بھی اس ویڈیو کو شیئر کیا۔وفاقی وزیر نے لکھا کہ پاکستان میں کرکٹ کے لیے جس طرح کا جنون پایا جاتا ہے اس کی کوئی مثال نہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More