ایان علی کا فلاحی کاموں کے لیے بڑا اعلان

سماء نیوز  |  Sep 25, 2020

پاکستان کی ماڈل اور گلوکارہ ایان علی نے اپنی آمدن کا 50 فیصد حصہ فلاحی کاموں کے لیے وقف کرنے کا اعلان کردیا۔

انسٹاگرام پر ایان علی نے اپنی ایک پوسٹ میں اپنے چاہنے والوں سے مخاطب ہوتے ہوئے لکھا کہ دوستوں میں نے فلاحی کاموں کے لیے این جی او بنائی ہوئی ہے جس کا بی مائے فرینڈ آرگنائزیشن کے نام سے برطانیہ میں اندراج ہے اور وہاں خواتین اور بچوں کو محفوظ اور بہتر زندگی فراہم کرنے کے لیے کام کیا جارہا ہے، اِس کے علاوہ اُنہیں تمام تر بنیادی ضروریات بھی مہیا کی جارہی ہیں۔

Friends I believe everythin that happens in ur life leads u towards betterment.It is an honor for me to share with u guys somethin that I was doin always but now on a much larger scale … My charitable organisation “Be My Friend Foundation” that I registered in United Kingdom which is goin to help out Children & Women in any form that I can either it’s Education,Medical Help basic necessities like Food,Shelter or Legal Help in my beloved home Pakistan or anywhere in the World.I always thought that how can we make the World a better place with all the negativity that’s around us couldn’t thought of a better idea then this 🙂 I decided that from now on whatever profit I will be recieving annually from the royalties of my Debut Album “Nothing Like Everything” & any other projects that I will do I m goin to donate 50 percent profit to my “Be My Friend Foundation” Social links: Instagram: @bemyfriend.foundation Facebook: https://www.facebook.com/BeMyFriendFoundation Twitter: https://twitter.com/bemyfriendfdn Official Website: http://bemyfriendfoundation.com

A post shared by Ayyan (@ayyanworld) on Sep 20, 2020 at 6:47am PDT

اُنہوں نے بتایا کہ میں نے ہمیشہ سوچا کہ دنیا میں بہتری کے لیے کیا کرسکتی ہوں اور اب میں نےفیصلہ کیا ہے کہ میں اپنی آمدن کا 50 فیصد حصہ فلاحی کاموں کے لیے وقف کروں گی۔

ایان علی نے مزید لکھا کہ اپنی ڈیبیو البم اور تمام پروجیکٹس کا 50 فیصد منافع وقف کروں گی۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More