سعودی ریسرچ اور مارکیٹنگ گروپ کی پہلی خاتون چیف ایگزیکٹوافسر کا تقرر

العربیہ  |  Oct 18, 2020

سعودی ریسرچ اور مارکیٹنگ گروپ ( ایس آر ایم جی) نے جمنا الراشد کو نئی چیف ایگزیکٹو آفیسر ( سی ای او) مقرر کیا ہے۔

اس گروپ کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے ہفتے کے روز ایک بیان میں کمپنی کی نئی سی ای او کے طور پر ان کے تقرر کا اعلان کیا ہے۔مس الراشد پہلی سعودی خاتون ہیں جنھیں کسی میڈیا گروپ کے اس اہم انتظامی عہدے پر مقرر کیا گیا ہے۔

انھوں نے لندن کی سٹی یونیورسٹی سے 2013ء میں انٹرنیشنل جرنلزم میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی تھی۔وہ اس سے پہلے میڈیا مشیر اور کمیونیکیشنز ڈائریکٹر رہ چکی ہیں۔

وہ اب خطے کے بڑے میڈیا گروپ ایس آر ایم جی کی انتظامی سربراہ کے طور پر خدمات انجام دیں گی۔ان کا تقرر سعودی ویژن 2030ء کے تحت کیا گیا ہے۔وسیع تر اصلاحات کے حامل اس منصوبے کے تحت باصلاحیت سعودی خواتین کو اہم ذمہ داریاں سونپی جارہی ہیں اور مملکت کی افرادی قوت میں شامل کیا جارہا ہے۔

اس اصلاحاتی منصوبہ کے تحت سعودی حکومت قریباً دس لاکھ سعودی خواتین کو روزگار دینا چاہتی ہے اور اعلیٰ تعلیم یافتہ سعودی خواتین کو مختلف سرکاری شعبوں میں اعلیٰ عہدے تفویض کرنا چاہتی ہے۔اس کے علاوہ انھیں مختلف نجی شعبوں میں بھی اہم ذمے داریاں سونپی جارہی ہیں۔

Congratulations to our MA International Journalism graduate @cityjournalism Joumana Al Rashed appointed first female chief executive for SA major publications group @aawsat_eng @aawsat_News https://t.co/RfbLGDuyhU

— Zahera Harb زاهرة حرب (@HarbZ1) October 16, 2020

جولائی میں وزارت تعلیم نے ڈاکٹر لیلک الصفادی کو سعودی عرب میں مخلوط تعلیم کی ایک جامعہ کی پہلی خاتون صدر مقرر کیا تھا۔ اسی ماہ سعودی حکومت نے تیرہ خواتین کو انسانی حقوق کونسل (ایچ آر سی) کی ارکان مقرر کرنے کا اعلان کیا تھا۔اب اس کونسل کے کل ارکان میں سے نصف خواتین ہیں۔

اگست میں الحرمین الشریفین کے انتظامی امور کی صدارت عامہ نے دس خواتین کو سینیر عہدوں پر مقرر کیا تھا۔عالمی بنک نے اسی ماہ ایک رپورٹ میں بتایا تھا کہ سعودی عرب نے 2017ء کے بعد صنفی مساوات کے ضمن میں دنیا بھرکے دوسرے ملکوں کے مقابلے میں نمایاں پیش رفت کی ہے۔

عالمی بنک نے ’’خواتین ، کاروبار اور قانون 2030‘‘ کے نام سے ایک مطالعاتی رپورٹ جاری کی تھی۔اس میں یہ بتایا گیا تھا کہ قوانین نے 190 معیشتوں (ممالک) سے تعلق رکھنے والی خواتین پر کیا اثرات مرتب کیے ہیں۔اس رپورٹ میں سعودی عرب نے خواتین کی ترقی کے مختلف اشاریوں میں 100 میں سے 70۰6 پوائنٹس حاصل کیے تھے جبکہ اس کے سابقہ پوائنٹس 31۰8 تھے۔

عالمی بنک کے علاقائی ڈائریکٹر برائے جی سی سی اعصام ابو سلیمان کا اس رپورٹ کے اجرا کے موقع پر کہنا تھا کہ ’’سعودی عرب خواتین کو بااختیار بنانے کے معاملے میں عرب دنیا کا لیڈر بن چکا ہے۔‘‘

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More