انڈر 19 کے ٹرائلز دینے کیلئے جوتے اور جرابیں تک نہیں تھیں: شاہنواز دھانی

روزنامہ اوصاف  |  Feb 25, 2021

کراچی (ویب ڈیسک ) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 6 میں ملتان سطانز کی نمائندگی کرنے والے نوجوان فاسٹ بائولر شاہنواز دھانی نے انکشاف کیا کہ جب وہ پہلی مرتبہ کرکٹ کے ٹرائل دینے کے لیے گئے تو ان کے پاس جرابیں اور جوتے بھی نہیں تھے، انہوں نے اپنے دوست سے لے کر انڈر 19 کے ٹرائل دیئے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو میں شاہنواز دھانی کا کہنا تھا کہ ان کے والد کی خواہش تھی کہ وہ پڑھ لکھ کر سرکاری افسر بنیں۔انہوں نے بتایا کہ گھر میں ٹی وی دیکھنے کی بھی اجازت بھی نہیں تھی کیونکہ والد کو لگتا تھا کہ ہم پڑھائی چھوڑ کر ٹی وی دیکھنے بیٹھ جائیں گے۔ سندھ کے شہر لاڑکانہ سے تعلق رکھنے والے شاہنواز دھانی کا کہنا تھا کہ انہیں کرکٹ کھیلنے کا بہت شوق تھا اور اسی لیے وہ چھپ کر کرکٹ کھیلتے رہتے تھے۔شاہنواز دھانی کے مطابق ایک دن لاڑکانہ ریجنل کرکٹ کے ایک عہدیدار ان کے گائوں آئے اور انہوں نے میری بائولنگ دیکھی تو مجھے لاڑکانہ انڈر 19 کے ٹرائلز میں آنے کی دعوت دی۔ان کا کہنا تھا کہ میں جب ٹرائلز دینے کے لیے گیا تو میرے پاس جوتے اور جرابیں تک نہیں تھیں جو میرے دوست نے مجھے دیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اس وقت تک میں نے ہارڈ بال سے کبھی کرکٹ نہیں کھیلی تھی لیکن ٹرائلز میں کامیابی کے بعد انٹرڈسٹرکٹ ٹورنامنٹ کھیلا۔ ان کا کہنا تھا کہ میں خود کو اس حوالے سے خوش قسمت سمجھتا ہوں کہ مجھے قائداعظم ٹرافی میں سندھ کی فرسٹ الیون سے کھیلنے کا موقع ملا اور اب ملتان سلطانز نے مجھے پی ایس ایل 6 میں ایمرجنگ کیٹگری میں شامل کیا ہے۔ خیال رہے کہ گزشتہ روز شاہنواز دھانی نے ملتان سلطانز کی جانب سے پی ایس ایل میں ڈیبیو کیا۔ 22 سالہ شاہنواز دھانی نے اپنی کارکردگی سے پشاور زلمی کے کپتان وہاب ریاض سمیت انگلش کمنٹیٹرز ڈیوڈ گاور کو بھی متاثر کیا۔
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More