چیئرمین سینیٹ الیکشن:مصدق ملک نے اپوزیش کاساتھ دینے والوں کابتادیا

سماء نیوز  |  Apr 22, 2021

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما مصدق ملک نے انکشاف کیا ہے کہ سینیٹ چیئرمین کی نشست پر یوسف رضا گیلانی کو ووٹ دینے والے زیادہ تر حکومتی اراکین کا تعلق جہانگیر ترین گروپ سے تھا۔

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے مصدق ملک کا کہنا تھا کہ سینیٹ چیئرمین کی نشست پر الیکشن کے موقع پر اپوزیشن سے رابطے میں رہنے والے زیادہ تر حکومتی اراکین جہانگیر ترین گرپ سے تھے۔

رہنما مسلم لیگ کا کہنا تھا کہ جہانگیرترین کیس میں چینی کی بات ہوتی ہے مگر جہانگیرترین کے خلاف کیس میں چینی کا ذکر ہی نہیں ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جہانگیرترین کے خلاف پرانے کیسز بنائے گئے ہیں جن کا دفاع وزیراعظم کرتے رہے ہیں۔

مصدق ملک نے کہا کہ یہ احتساب نہیں انتقام کی آگ ہے اور نون لیگی رہنماؤں کی ضمانتوں پر عدالتوں کے ریمارکس نیب کے خلاف چارج شیٹ ہے۔

رہنما ن لیگ کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے پہلے کہا تھا کہ رانا ثنااللہ کو جیل میں ڈالوں گا اور پھر ان کے خلاف منشیات اسمگلنگ کا جھوٹا مقدمہ درج کرایا گیا۔

موجودہ ملکی صورتحال سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ اگر میں وزیراعظم کی جگہ ہوتا تو میں اس وقت آل پارٹی کانفرنس بلاتا مگر جب ہم حکومت کو کوئی تجویز دیتے ہیں تو کہا جاتا ہے ہم این آراو مانگ رہے ہیں۔

پروگرام میں شریک ایک اور مہمان اور پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما مولا بخش چانڈیو سے جب سماء کے سینئر اینکر ندیم ملک نے سینیٹ الیکشن میں جہانگرترین گروپ کی جانب سے یوسف رضاگیلانی کا ساتھ دینے کے حوالے سے سوال کیا تو مولا بخش چانڈیو نے کہا کہ جہانگیر ترین ،احمد محمود اور یوسف رضا گیلانی کی آپس میں رشتہ داریاں ہیں۔

مزید گفتگو کرتے ہوئے مولا بخش چانڈیو کا کہنا تھا کہ ساری افراتفری کے ذمہ دار وزیراعظم ہیں جنہیں کچھ سمجھ نہیں آرہا اور ان کا مسئلے پر کوئی ایک مؤقف نہیں ہوتا۔

آصف زرداری کے خلاف مقدمات سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ الزام لگایا گیا کہ لانچوں سے پیسے ملے ہیں وہ پیسے کہاں گئے۔

رہنما پیپلزپارٹی نے کہا کہ اے پی ایس واقعے کے علاوہ ہم کسی مسئلے پر سنجیدہ نہیں ہوئے یہ حکمران وقت کی ذمہ داری ہے کہ قوم کو اس راستے پر لگائے جہاں قوم کی بہتری ہو۔ انہوں نے کہا کہ جب بلاول بھٹو نے ایک ساتھ چلنے کا کہا تو ان کا مزاق اڑایا گیا۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما تحریک انصاف فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ کسی کو ضمانت ملنا اس کا قانونی حق ہے لیکن ن لیگ والوں کی اکثر خوشیاں عارضی ہوتی ہیں، شہبازشریف کے کسیز اپنی جگہ موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ن لیگ والے کہتے تھے کہ جہانگیرترین کو این آر او دیا گیا ہے اب جب ان کا احتساب ہورہا ہے تو اس پربھی انہیں اعتراض ہے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ حکومت میں آکر جس نے پہلی شوگر مل لگائی تھی اس کانام نواز شریف ہے جبکہ شاہد خاقان عباسی نے اپنی وزارت عظمیٰ کے دور میں شوگرملزکو 26 ارب روپے کی سبسڈی دی تھی۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ نے اومنی گروپ کو 4 ارب روپے کی سبسڈی دی تھی۔ انہوں نے اپنی بات آگے بڑھاتے ہوئے کہا کہ سن 2008 میں اومنی گروپ کے پاس ایک شوگرمل تھی جبکہ آج زرداری کی شفقت سے وہ گروپ 11 شوگرملز کا مالک ہے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ اپوزیشن نیب کیسز کو سیاست سےجوڑتی ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ انہوں نے جو بویا ہے وہی کاٹ رہے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More