ملک میں بیروزگاری کی شرح میں اضافہ

سماء نیوز  |  Jun 10, 2021

فوٹو: ٹوئٹر

سال 2020-21 کے پیش کیے گئے اقتصادی سروے کے مطابق ملک بھر میں کرونا وائرس اور گزشتہ سال لگائے گئے لاک ڈاؤن کے باعث بیروز گاری کی شرح میں اضافہ ہوا ہے۔

وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کی جانب سے جمعرات 10 جون کو قومی اقتصادی سروے 2021-2020 پیش کیا گیا۔ اقتصادی سروے میں وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ کرونا وائرس سے قبل برسرِ روزگار افراد کی تعداد 5 کروڑ60 لاکھ تھی اور لاک ڈاون کے نفاذ کے بعد برسرِ روزگار افراد کی تعداد کم ہو کر 3 کروڑ 50 لاکھ رہ گئی تھی جو اکتوبر 2020 میں بڑھ کر 5 کروڑ 30 لاکھ ہوگئی۔

انہوں نے بتایا کہ لیبر فورس سروے 18-2017 کے مطابق مالی سال 21-2020 کے لیے بے روزگاری کی شرح 9 اعشارئیہ 56 فیصد بتائی گئی تھی۔ جبکہ مختلف رپورٹس کے مطابق رواں سال بے روزگاری کی شرح 8 اعشارئیہ 83 فیصد ریکارڈ کی گئی۔

دوسری جانب ڈان نیوز کے آرٹیکل کے مطابق مالی سال 21-2020 کے دوران ملک میں بے روزگار افراد کی تعداد 66 لاکھ 50 ہزار تک پہنچنے کا تخمینہ لگایا گیا، جب کہ مالی سال 20-2019 کے دوران اس کی تعداد 58 لاکھ تھی۔ اوسطا بیروزگاری کی شرح میں نوجوانوں کی بے روزگاری کی شرح زیادہ ہے۔ پاکستانی معیشت کرونا وائرس کے سبب بری طرح متاثر ہوئی جس سے سب سے زیادہ لوگوں کے روزگار متاثر ہوئے ہیں۔

نوٹ: واضح رہے کہ قومی اقتصادی سروے ہر سال بجٹ سے ایک روز قبل  پیش کیا جاتا ہے جس میں حکومت کی جانب سے مختلف شعبوں میں ناکامیاں اور کامیابیاں سمیت ملک کی معاشی صورت حال کا جائزہ لیا جاتا ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More