ڈولفن اور وہیل مچھلیوں کے شکار کا ’ظالمانہ‘ تہوار

ڈی ڈبلیو اردو  |  Sep 15, 2021

فیرو جزائر پر شکار کی گئی ڈولفن اور وہیل مچھلیوں سے ملنے والی چربی اور گوشت کو کمیونٹی کے درمیان تقسیم کیا جاتا ہے۔

ڈنمارک کے ماتحت خودمختار فیرو جزائر پر وہیل مچھلیوں کو مارنے کے امسالہ تہوار میں سینکڑوں ڈولفنز کی اموات  کے سبب ایک بڑا تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔ ڈنمارک کے میڈیا کی رپورٹوں کے مطابق رواں برس 1428 ڈولفن مچھلیوں کا شکار  کرتے ہوئے انہیں قتل کیا گیا۔

شمالی بحر اوقیانوس کے چھوٹے سے جزیروں پر گزشتہ چار سو سالوں سے 'گرنڈاڈراپ‘  نامی مچھلیوں کے شکار کا تہوار منایا جاتا ہے۔ تاہم رواں برس کے تہوار میں ہلاک کیے گئے سمندری جانوروں کی تعداد میں اضافے کی وجہ سے جزائر کی ساکھ کو کافی نقصان پہنچا ہے۔

ویڈیو دیکھیے 04:50 دریائے سندھ کی نایاب انڈس ڈولفن

بھیجیے Facebook Twitter Whatsapp Web EMail Facebook Messenger Web reddit

پیرما لنک https://p.dw.com/p/3UwZl

دریائے سندھ کی نایاب انڈس ڈولفن

سی شیفرڈ نامی ماحولیاتی تحفظ کی تنظیم نے فیس بک پر پوسٹ کی گئی ایک طویل دورانیے کی ویڈیو میں وائٹ سائیڈڈ ڈولفنز  کو ہلاک کرتے ہوئے دکھایا اور بتایا کہ فیرو جزائر پر اس ممالیہ جانور کے سب سے بڑے گروپ کو ایک ہی وقت میں ہلاک کر دیا گیا۔

سوئٹزرلینڈ میں واقع سمندری حیات کے تحفظ کی ایک اور تنظیم اوشن کیئر نے بھی اس عمل پر شدید تنقید کی ہے۔ سوئس تنظیم کے مطابق اس تہوار میں حد عبور کر دی گئی اور اس مرتبہ شکار کرنے کا ایک نیا زاویہ دیکھا گیا۔

بڑی تعداد میں ڈولفنز کا قتل

فیرو جزائر پر عام طور پر ہر سال ایک ہزار تک سمندری ممالیہ  کا شکار کیا جاتا ہے۔ پچھلے سال یہاں محض 35 وائٹ سائیڈڈ ڈولفنز کو ہلاک کیا گیا تھا۔

ویڈیو دیکھیے 05:25 بحیرہٴ اسود کی ڈولفنز کی ہلاکتیں

بھیجیے Facebook Twitter Whatsapp Web EMail Facebook Messenger Web reddit

پیرما لنک https://p.dw.com/p/2X6qL

بحیرہٴ اسود کی ڈولفنز کی ہلاکتیں

اس سال وہیل اور ڈولفن کے شکار کے تہوار میں شریک ہونے والے بہت سارے مقامی افراد نے اس قتل و غارت سے فاصلہ اختیار کر لیا اور ڈولفن کے شکار کو ضرورت سے زیادہ قرار دیا۔ تاہم اس جزیرے کے ماہی گیری کے وزیر جیکب ویسٹر گارڈ نے مقامی ریڈیو کو بتایا کہ ڈولفن کا شکار ضوابط کے تحت کیا گیا ہے۔

وہیل مچھلیوں کا شکار

شکار کے دوران عام طور پر ڈولفن کی بجائے وہیل مچھلیاں  شکاریوں کے نشانے پر ہوتی ہیں۔ ان مچھلیوں کو پہلے کم پانیوں تک لایا جاتا ہے، جہاں پھر انہیں چاقووں سے کاٹا جاتا ہے۔ شکار کے اس عمل کو مقامی قوانین کے ذریعے کنٹرول کیا جاتا ہے۔  وہیل مچھلیوں سے ملنے والی چربی اور گوشت کو کمیونٹی کے درمیان تقسیم کیا جاتا ہے۔ اس تہوار میں شکار کی جانے والی پائلٹ وہیل مچھلیاں اور وائٹ سائیڈڈ ڈولفنز، دونوں ہی کو ناپید ہونے کے خطرات  لاحق نہیں ہیں۔

ع آ / ا ا (ڈی پی اے، اے پی)

ویڈیو دیکھیے 05:30 انڈس ڈولفن واقعی نابینا ہوتی ہے؟

بھیجیے Facebook Twitter Whatsapp Web EMail Facebook Messenger Web reddit

پیرما لنک https://p.dw.com/p/3ZMXX

انڈس ڈولفن واقعی نابینا ہوتی ہے؟

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More