جی20 اجلاس:افغانستان کو مزید سرمایہ فراہم کرنے پر اتفاق

سماء نیوز  |  Oct 13, 2021

دنیا کے مضبوط معاشی بیس ممالک پر مشتمل جی20 ممالک کا ایک آن لائن اجلاس منگل کو اٹلی کے زیرصدارت منعقد ہوا جس میں افغانستان کو مزید سرمایہ فراہم کرنے پر اتقاق کیا تاہم طالبان کو فنڈز دینے کی بجائے دیگر طریقوں پر غور کیا گیا۔

اجلاس سے قبل اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے ایک بیان میں کہا تھا کہ جنگ سے متاثرہ ملک افغانستان کی معیشت، جو اب طالبان کے کنٹرول میں ہے، انسانی تباہی کے دہانے پر پہنچ رہی ہے۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کا کہنا تھا کہ اگر ہم نے صورت حال سے نمٹنے کے لیے افغان باشندوں کی مدد نہ کی تو جلد ہی اس کی بھاری قیمت نہ صرف افغانستان بلکہ پوری دنیا کو چکانی پڑے گی۔

انتونیو گوتریس کا مزید کہنا تھا کہ افغان شہریوں کے پاس روزگار اور کھانے کےلیے خوراک نہیں ہے جس کی وجہ سے زیادہ سے زیادہ افغان باشندے اپنے ملک سے فرار ہو کر دوسرے علاقوں کی طرف جائیں گے۔

یورپی یونین نے سربراہی اجلاس کے دوران افغانستان کو ایک بڑی انسانی اور سماجی و معاشی تباہی سے بچانے کے لیے ایک ارب 15 کروڑ ڈالر کے امدادی پیکیج کا اعلان کیا۔

وائس آف امریکا نے اقوام متحدہ کے تازہ ترین اعداد و شمارکے حوالے سے لکھا ہے کہ  صرف رواں سال کے دوران لڑائیوں کے باعث بے گھر ہونے والے افغان باشندوں کی تعداد 50 لاکھ سے زیادہ ہے۔ تقریباً ایک کروڑ 70 لاکھ افغان باشندوں کو خوراک کی قلت کا سامنا ہے اور 5 سال سے کم عمر کے بچوں کی نصف تعداد کو مناسب غذا میسر نہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More