رہائی کے بعد شاہ رخ خان کے بیٹے کو گھر میں نظر بند کرنے کی تیاری

بول نیوز  |  Oct 26, 2021

رہائی کے بعد شاہ رخ خان کے بڑے بیٹے آریان خان کو گھر میں نظر بند کرنے کی تیاری کر لی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی اداکار شاہ رخ خان کے بیٹے آریان خان کی درخواستِ ضمانت پر آج ممبئی ہائی کورٹ میں سماعت ہوگی۔

 ذرائع کے مطابق ممبئی کروز شپ منشیات کیس میں گرفتار آریان خان کے والدین شاہ رخ خان اور گوری نے بیٹے کی رہائی کے بعد انہیں گھر میں نظر بند کرنے کی تیاری کرلی ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق اگر آج آریان کی درخواستِ ضمانت پر فیصلہ سُنا دیا جاتا ہے اور آریان کو آرتھر روڈ جیل سے رہا کردیا جاتا ہے تو والدین کچھ ماہ آریان خان کو گھر میں ہی نظر بند کردیں گے۔

گھر میں نظر بندی کی مدت کے دوران آریان خان پر کسی بھی قسم کی پارٹی میں شرکت، دوستوں کے ساتھ لیٹ نائٹ اکٹھے ہونے پر مکمل پابندی ہوگی۔

شاہ رخ اور گوری نے آریان خان کی کمپنی پر بھی سخت نظر رکھنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ وہ ہر اس شخص سے دور رہے جو اس کے لیے معمولی سے بھی پریشانی کا باعث بن سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں :

پاکستان کے معروف سوشل میڈیا اسٹار وقار ذکا نے بالی ووڈ اداکار شاہ رخ خان کو پاکستان منتقل ہونے کا مشورہ دے دیا۔

وقار ذکا کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک پوسٹ شئیر کی گئی ہے۔

وقار ذکا نے اپنے ٹوئٹ میں بھارتی اداکار کنگ خان کو ٹیگ کرتے ہوئے انہیں سر بھی لکھا ہے۔

Sir @iamsrk leave India and shift to Pakistan along with ur family – this is bullshit what @narendramodi Govt is doing with ur family , I stand with SKR

— Waqar Zaka (@ZakaWaqar) October 22, 2021

انہوں نے شاہ رخ خان کو مشورہ دیا کہ وہ بھارت چھوڑ کر اہلخانہ کے ہمراہ پاکستان آجائیں۔

وقار ذکا نے ٹوئٹ میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو بھی مینشن کیا اور شاہ رخ خان کو یاد دلایا کہ مودی کی حکومت ان کے خاندان کے ساتھ ناانصافی کر رہی ہے۔

انہوں نے ٹوئٹ میں شاہ رخ خان کے خاندان کے ساتھ مودی حکومت کی ناانصافی کی وضاحت نہیں کی۔

واضح رہے کہ اداکار شاہ رخ خان کا بیٹا آریان خان منشیات استعمال کرنے اور رکھنے کے الزام میں تقریباً ایک ماہ سے گرفتار ہے۔

Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More