طالبان کےنئے ارادے پرسابق حکمرانوں سمیت دیگر شخصیات پریشان

سماء نیوز  |  Nov 18, 2021

افغانستان میں طالبان حکومت کے ایک اہم وزیر کے سابقہ حکومت میں کرپشن کرنے والے افراد کے احتساب کے اعلان پر افغان سیاسی رہنماؤں نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔

افغانستان کےسابق صدر حامد کرزئی کا کہنا ہے کہ وہ مذکورہ بیان کو قابل تبصرہ نہیں سمجھتے مگر ان کی تجویز ہے کہ قومی اتحاد اور یکجہتی ہی وطن عزیر کی عزت اور ایک مستحکم قومی نظام کی تشکیل کا راستہ ہے۔

بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے افغانستان کے سابق وزیرخارجہ محمد حنیف اتمر کا کہنا تھا کہ طالبان رہنما کے بیان نے امن کے متلاشی اور قومی اتحاد کے حامی تمام افغانوں کو افسردہ کردیا ہے۔

حنیف اتمر کا کہنا ہے کہ جن رہنماؤں کے نام لیے جارہے ہیں انہوں نے امن کے لیے بہت قربانیں دیں ہیں۔ ایسے بیانات ملک کے مفاد میں نہیں ہے گریز کرنا چاہیے۔

واضح رہے کہ منگل کو ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے افغان عبوری حکومت کے ایک وزیر شیخ محمد محمود کا کہنا تھا کہ طالبان سابقہ حکومت میں قومی خزانہ لوٹنے اورکرپشن میں ملوث افراد کا احتساب کریں گے۔

شیخ محمد محمود کا کہنا ہے کہ تحقیقات میں یہ دیکھیں گے یہ ان لوگوں کا کاروبار کیا تھا اور ان کے پاس اتنا بڑا سرمایہ کہاں سے آیا۔

انہوں نے کہا کہ اللہ کے فضل سے طالبان اب ان لوگوں کا احتساب کریں گے جن کی اکثریت شائد اسی ڈر سے ملک چھوڑ کر بیرون ملک جاچکی ہے۔

واضح رہے کہ طالبان نے کابل کا کنٹرول سنبھالنے کے بعد گزشتہ حکومتوں کے اعلیٰ سول اور عسکری حکام کے لیے عام معافی کا اعلان کیا تھا اور انہیں یقین دلایا تھا کہ وہ کسی سے انتقام نہیں لیں گے تاہم اب طالبان رہنما کی جانب سے کرپٹ افراد کے مالی لین دین کے احتساب کا بیان سامنے آیا ہے۔

اس سے قبل طالبان کی وزارت انصاف نے ملک کے مختلف صوبوں میں قبضے کے زمینوں پر بڑی رہائشی اسکیموں کی نشاندہی کی تھی جنکی مالکان میں اکثریت سابق حکومت میں اعلیٰ عہدوں پر رہنے والی لوگوں کی ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More