ناسا کا کمرشل اسپیس اسٹیشنز بنانے کے لیے تین کمپنیوں کا انتخاب

بول نیوز  |  Dec 04, 2021

ناسا نے مزید پرائیویٹ اسپیس اسٹیشنز بنانے کے لیے حکومتی فنڈنگ پانے والی تین کمپنیوں کا اعلان کردیا۔

11 تجاویز میں سے ناسا نے بلیو اوریجن، نینو ریکس ایل ایل سی اور نورتھروپ گرُمین کا انتخاب کیا ہے جنہیں تین مختلف اسپیس ایکٹ معاہدوں کے ذریعے 40 کروڑ ڈالرز سے زائد کی رقم دی جائے گی۔

ناسا نے اپنے Commercial Low Earth Orbit Development (CLD) پروگرام کےلیے جولائی میں تجاویز مانگیں تھیں۔ اس کا مقصد کمرشل خلائی اسٹیشنز بنانا تھا۔

یہ ایک بڑے منصوبے کا حصہ ہے جس میں انٹرنیشنل خلائی اسٹیشن کو کمرشل خلائی اسٹیشنز سے بدلنا ہے۔

اس طرح سے ناسا کمرشل اسپیس انڈسٹری کا گاہک ہوجائے گا جس سے اس کا پیسہ اور توجہ تحقیق اور دریافتوں پر مرکوز ہوجائے گی۔

بلیو اوریجن کو اوربِٹل ریف بنانے کے لیے 13 کروڑ ڈالرز ملیں گے۔ اس فری-فلائینگ اسپیس اسٹیشن کے خیال کا اعلان کمپنی نے اکتوبر میں کیا تھا۔ بلیو اوریجن کے مطابق اسٹیشن دہائی کے دورسرے نصف تک فعال ہوجائے گا۔

نینوریکس کو اس کے اسٹارلیب اسٹیشن کے لیے 16 کروڑ ڈالرز ملیں گے۔ ناسا کے مطابق اسٹار لیب کو 2027 میں سنگل فلائٹ میں لانچ کیا جائے گا۔

نورتھروپ گرُمین کو 12.56 کروڑ ڈالرز ملین گے جسے وہ سائگنس اسپیس کرافٹ جیسی موجودہ ٹیکنالوجیز کو استعمال کرتے ہوئے کمرشل اسپیس اسٹیشن بنائے گا۔

Square Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More