افغان لڑکی کا امریکی صدر کو خط، ملالہ نے پڑھ کر سنا دیا

بول نیوز  |  Dec 07, 2021

ملالہ یوسفزئی نے واشنگٹن دورے کے دوران افغان لڑکی کا امریکی صدر کو خط پڑھ کر سنادیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق انسانی حقوق کی علبردار ملالہ یوسفزئی نے واشنگٹن کا دورہ کیا اور اس دوران انہوں نے امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن کے ساتھ کھڑے ہوکر ایک 15 سالہ افغان لڑکی ستودہ کی طرف سے امریکی صدر جوبائیڈن کے نام خط پیش کیا۔

خط پیش کرتے ہوئے ملالہ یوسفزئی نے کہا کہ یہ موجودہ حالات میں افغان لڑکیوں کا پیغام ہے ’ہم ایک ایسی دنیا دیکھنا چاہتے ہیں جہاں تمام لڑکیاں محفوظ ہوں اور لڑکیوں کو معیاری تعلیم تک رسائی حاصل ہو‘۔

ملالہ یوسفزئی کا خط پڑھتے ہوئے کہنا تھا کہ ’لڑکیوں کے لیے جتنی دیر تک اسکول اور یونیورسٹیز بند رہیں گی اتنے ہی ان کے بہتر مستقبل کی امیدوں پر سائے بڑھتے جائیں گے‘۔

یہ بھی پڑھیں: افغانستان میں ایک ملین بچوں کو موت کا خطرہ

خط پڑھتے ہوئے ملالہ کا مزید کہنا تھا کہ لڑکیوں کی تعلیم امن و سلامتی لانے کا ایک طاقتور ذریعہ ہے، اگر لڑکیاں علم حاصل نہیں کریں گی تو افغانستان کو بھی نقصان ہوگا۔

ملالہ یوسفزئی کا امریکی وزیر خارجہ سے ملاقات سے قبل کہنا تھا کہ ہمیں امید ہے کہ امریکا اقوام متحدہ کے ساتھ مل کر لڑکیوں کو جلد از جلد ان کے اسکولوں میں واپس بھیجنے کی اجازت یقینی بنانے کے لیے فوری اقدامات کرے گا۔

واضح رہے کہ افغانستان میں طالبان کے اقتدار سنبھالنے کے بعد صرف لڑکوں کو پڑھانے کی اجازت دی گئی ہے جبکہ صرف لڑکوں کی تعلیم کے لیے ہی سیکنڈری اسکولوں کوکھولا گیا ہے۔

Square Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More