پاکستان کا افغانستان میں این جی اوز کے ارکان کو چھ ماہ کا ویزہ دینے کا فیصلہ

اردو نیوز  |  Dec 07, 2021

پاکستان نے فیصلہ کیا ہے کہ افغانستان میں انسانی ہمدردی کے تحت کام کرنے والی غیر ملکی این جی اوز کے ارکان کو تین ماہ کے بجائے چھ ماہ کا ویزہ جاری کیا جائے گا اور ان کے لیے سکیورٹی کلیئرنس کی شرط بھی ختم کر دی جائے گی۔ 

اسی طرح افغانستان سے غیرملکیوں اور افغان شہریوں کے انخلا کا دوسرا مرحلہ شروع کرتے ہوئے دو ماہ تک زمینی اور فضائی راستوں کی فراہمی اور 30 دن کا ویزہ جاری کیا جائے گا۔ 

وفاقی کابینہ آج ان فیصلوں کی باضابطہ منظوری دے گی۔ 

اردو کو نیوز کو دستیاب وزارت داخلہ کی جانب سے وفاقی کابینہ کو بھیجی گئی دو الگ الگ سمریوں کے مطابق یہ فیصلے وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت افغان بین الوزارتی سیل کی ایپیکس کمیٹی کے اجلاس میں کیے گئے تھے۔ 

سابق پالیسی کے تحت غیر ملکی این جی اوز کے ورکرز کو تین ماہ کے لیے پاکستان کا ویزہ جاری کیا جاتا تھا۔ ویزے کا اجراء پاکستان کی انٹیلی جینس ایجنسیوں کی جانب سے سکیورٹی کلیئرنس سے مشروط تھا۔ جس کے لیے دو ہفتے کا وقت لیا جاتا تھا۔ 

وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اس حوالے سے متعلقہ سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مزید مشاورت کی جائے گی۔ جس کے لیے اجلاس 24 نومبر کو ہوا۔ 

غیر ملکی این جی اوز کو ویزہ دینے کے بعد سکیورٹی اداروں کو آگاہ کیا جائے گا۔ فائل فوٹو: ان سپلیشمشاورت کے بعد تجویز کیا گیا ہے کہ غیر ملکی این جی اوز جو افغانستان میں انسانی ہمدردی کے تحت کام کرنا چاہتی ہیں انہیں سکیورٹی کلیئرنس کے بغیر چھ ماہ کا ویزہ جاری کیا جائے اور ان کو ویزہ جاری کرتے ساتھ ہی سکیورٹی اداروں کو آگاہ کر دیا جائے گا۔

اس فیصلے کے تحت یہ سہولت ابتدائی چھ ماہ کے لیے ہوگی جس کا آغاز اس سلسلے میں نوٹی فکیشن جاری ہونے سے ہوگا۔ چھ ماہ کے بعد ویزوں میں توسیع موجودہ پالیسی کے تحت سکیورٹی کلیئرنس کے بعد ہی کی جائے گی۔ 

وزارت داخلہ کی جانب سے وفاقی کابینہ کو بھیجی گئی دوسری سمری میں کہا گیا ہے کہ پاکستان نے ورلڈ بینک، آئی ایم ایف، ایشیائی ترقیاتی بینک، اقوام متحدہ اور غیر ملکی این جی اوز کے علاوہ افغان شہریوں کو کسی تیسرے ملک جانے کے لیے افغانستان سے انخلا میں مدد دی اور 15 اگست سے 18 اکتوبر تک انخلا کا سلسلہ جاری رکھا۔ اس مقصد کے لیے انہیں 30 دن کے ٹرانزٹ ویزے جاری کیے گئے اور زمینی اور فضائی روٹ فراہم کیے۔ 

سابق پالیسی کے تحت غیر ملکی این جی اوز کے ورکرز کو تین ماہ کے لیے پاکستان کا ویزہ جاری کیا جاتا تھا۔ فائل فوٹو: اے ایف پیکابینہ کی ہدایت پر گذشتہ ماہ یہ سلسلہ روک دیا گیا تاہم کئی غیر ملکی سفارت خانوں نے رابطے کرکے یہ سہولت بحال کرنے کی درخواست کی ہے۔ 

وزیراعظم کی زیر صدارت افغان بین الوزارتی سیل کی ایپیکس کمیٹی کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اس سہولت کو بحال کیا جائے گا۔ 

اس سلسلے میں ان ملکوں کے ساتھ مسلسل رابطہ قائم کیا جائے جہاں انخلا ہونے والے افراد جانا چاہیں گے۔ یہ سہولت بھی مزید دو ماہ کے لیے فراہم کی جائے گی۔ 

وزارت داخلہ کے حکام نے بتایا ہے کہ چونکہ یہ فیصلے وزیراعظم کی سربراہی میں اعلٰی سطحی اجلاسوں میں کیے اس لیے امکان ہے کہ کابینہ رسمی کارروائی کرتے ہوئے آج ان کی منظوری دے گی۔ 

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More