گلابی ماسک اطالوی پولیس کی ساکھ کے لیے خطرہ کیسے؟

اردو نیوز  |  Jan 15, 2022

اطالوی پولیس یونین نے اہلکاروں کو مہیا کیے جانے والے گلابی ماسک پر اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ یہ پولیس یونیفارم کے ساتھ میل نہیں کھاتے اور ’ادارے کی ساکھ کے لیے خطرہ‘ ہیں۔

نیوز ایجنسی اے ایف پی کے مطابق اس یونین کے سربراہ نے نیشنل پولیس چیف کو اس حوالے سے ایک خط بھی لکھا ہے۔

سٹیفینو پاؤلونی نے کہا ہے کہ ’پولیس مینیجرز کو ڈیکورم کا خیال رکھنا چاہیے۔ انہیں اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ آفیسرز کو ایسے رنگ کے ماسک نہ پہنائے جائیں جو نہ صرف وردی کے ساتھ عجیب لگتے ہیں بلکہ ادارے کی ساکھ کے لیے بھی خطرہ ہیں۔‘

انہوں نے مشورہ دیا کہ سفید، نیلے اور کالے ماسک مہیا کرنے چاہئیں جو نیلے یونیفارم کے ساتھ اچھے لگتے ہیں۔

ڈپٹی انفراسٹرکچر منسٹر ٹریسا بیلانوا نے ٹوئٹر پر لکھا کہ ’رنگین ماسک پہننے سے ساکھ کو کوئی نقصان نہیں پہنچتا۔ یونیفارم کی عزت رنگوں سے نہیں بلکہ اس کو پہننے والے مردوں اور عورتوں کے کام سے بڑھتی ہے۔‘

ایس اے پی نامی پولیس یونین کے 20 ہزار کے قریب ممبران ہیں۔ اس کا کہنا ہے کہ سسلی اور شمالی اٹلی میں گلابی ماسک تقسیم کیے گئے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More