وزیراعلٰی سندھ ایک مافیا کے رکن ہیں جس کا گاڈ فادر آصف زرداری ہے، علی زیدی

بول نیوز  |  Jan 15, 2022

وفاقی وزیرعلی زیدی کا کہنا ہے کہ سی ایم صاحب ایک مافیا کے رکن ہیں جس کا گاڈ فادر آصف زرداری ہے۔ اٹھارہویں ترمیم کی باتیں کرنے والے سی ایم صاحب خود اختیارات چھین رہے ہیں۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر بحری امور اور شپنگ علی زیدی نے سندھ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہمیں 18ہویں ترمیم اورجمہوریت کا سبق سکھاتے آئے ہیں اور خود سندھ میں کالا قانون لائی ہے۔

علی زیدی نے کہا کہ آج ساڑھے تین سال ہوگئے۔ نیشنل اسمبلی میں یہ کئی کمیٹیوں کے ممبر اور چیئرمین ہیں۔ انہوں نے سندھ میں اپوزیشن کے کسی ممبر کو کسی بھی کمیٹی میں نہیں رکھا۔ ان سے بڑا جمہوریت پر ڈاکا ڈالنے والا کوئی نہیں ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ یہ حکومتوں میں رہنے کے باوجود بھی بی بی کے قاتلوں کو نہیں پکڑ سکتے۔ یہ بی بی کی برسی پر صرف ناچ گانا کرتے ہیں۔ یہ جمہوریت سے پہلے انسانیت سیکھ لیں۔

صدرتحریکِ انصاف سندھ نے اپنی گفتگو میں کہا کہ سندھ حکومت سے نالے صاف نہیں ہوئے، کچرا ان سے اٹھایا نہیں جاتا۔ یہ صرف باتیں کرتے ہیں۔ یہ کے سی آر نہیں ٹھیک کرسکے جبکہ کے فور کا منصوبہ وفاق بنا رہا ہے۔

علی زیدی نے کہا کہ یہ کتے کے کاٹے کی ویکسین نہیں دے سکتے، یہ کورونا کی ویکسین کیا دیں گے۔ بلاول کہتے ہیں کہ میں 27 فروری کو کراچی سے اسلام آباد مارچ کریں گے۔ میں اعلان کرتا ہوں کہ میں سندھ کے عوام کے ساتھ گھوٹکی سے کراچی مارچ کروں گا۔

انھوں نے مذید کہا کہ میں کراچی نہیں بلکہ پورے سندھ سے مخاطب ہوں۔ یہ سندھ کے لوگوں کے تمام حقوق کھا جائیں گے۔ انہوں نے وعدہ کیا تھا کہ ہرڈویژن کی الگ اتھارٹی بنائیں گےجیسے کراچی بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی ہے۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیرعلی زیدی نے سندھ کی صدارت ملنے پر چیئرمین عمران خان کا شکریہ بھی ادا کیا۔

اس سے وفاقی وزیرعلی زیدی کی زیر صدارت سندھ ایڈوائزری کونسل کا اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزیر میاں محمد سومرو، سابق وزیراعلیٰ ڈاکٹر ارباب غلام رحیم، اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ، سینئر رہنما امیر بخش بھٹو، جنرل سیکریٹری سندھ مبین جتوئی، سینیٹر سیف اللہ ابڑو، پارلیمانی لیڈر خرم شیر زمان موجود تھے۔

پی اے سی کے اجلاس میں سندھ کی سیاسی صورتحال پر تفصیلی گفتگو اور بلدیاتی قانون کے خلاف احتجاج سمیت مختلف آپشنز پر مشاورت کی گئی۔

Square Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More