وہیل شارک کی بڑی تعداد جہازوں کے تصادم سے مر رہی ہیں: تحقیق

بول نیوز  |  May 11, 2022

آبی حیاتیات کے ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ جہاز رہانی کے سبب معدومیت کے خطرے سے دو چار وہیل شارک کے لیے مزید خطرات بڑھتے جارہے ہیں۔

محققین کو معلوم ہوا کہ جہاز شارکس کی بڑی تعداد کو مار رہے ہیں، جو آج اس زمین پر موجود مچھلی کی سب سے بڑی قسم ہے۔

گزشتہ سالوں میں ان کی تعداد دنیا بھر میں کم ہو رہی تھی لیکن ماہرین اس معاملے پر الجھے ہوئے تھے کہ ایسا کیوں ہو رہا ہے۔

اب مرین بائیولوجیکل ایسوسی ایشن اور یونیورسٹی آف ساؤتھیمپٹن کے سائنس دانوں کی رہنمائی میں یہ نئی تحقیق کی گئی جس میں یہ بات سامنے آئی کہ وہیل شارکوں کے بڑے بڑے جہازوں کے ساتھ مہلک تصادم کو بہت نظر انداز کیا جاتا ہے اور یہ وہ وجہ ہوسکتی ہے کہ ان کی تعداد کم ہو رہی ہے۔

یہ پہلے بھی بتایا جا چکا ہے کہ کیوں کہ وہیل شارک زیادہ تر وقت پانی کی سطح اور ساحلی علاقوں پر گزارتی ہیں، اس لیے ان کی اموات کی بڑی تعداد جہازوں کے تصادم کے ساتھ ہو سکتی ہیں۔

تاہم، اب تک اس خطرے کی نگرانی کے لیے کوئی طریقہ کار نہیں ہے۔

مزید پڑھیں27 mins agoبورس جانسن بھی ٹِک ٹاک پر آگئے

برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن بھی مشہور ویڈیو ایپلی کیشن ٹِک ٹاک...

20 hours agoایک ماہ میں بٹ کوائن کی مارکیٹ ویلیو میں اربوں ڈالر کی کمی

کرپٹو کرنسی مارکیٹ میں ہونے والی کمی کے نتیجے میں ایک ماہ...

21 hours agoآئی فون استعمال کرنے والے اچھے ڈرائیور ہوتے ہیں یا اینڈرائیڈ صارفین؟

اگر بجٹ اور جیب اجازت دے تو موبائل فون صارفین کی اکثریت...

24 hours ago’کورونا سے ہونے والی اموات کے ایک تہائی حصے کا تعلق بھارت سے ہے‘

عالمی ادارہ صحت کی جانب سے جاری ہونے والی نئی رپورٹ میں...

1 day agoجیمز ویب اسپیس ٹیلی اسکوپ کے مشاہدات علمِ فلکیات کو ہمیشہ کے لیے بدل دیں گے

ماہرینِ فلکیات کا کہنا ہے کہ جیمز ویب اسپیس ٹیلی اسکوپ سے...

1 day agoسونی نے تین ماہ میں لاکھوں گیمنگ کنسول فروخت کردیے

سونی کارپوریشن نے پلے اسٹیشن 5  کے 19 ملین گیمنگ کنسول فروخت...

تازہ ترین نیوز پڑہنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کریں بول نیوزایپ

General Rectangle – 300×250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More