واٹس ایپ کا ایسا فنکشن جس کے ذریعے آپ خود کو پیغام بھیج سکتے ہیں

بی بی سی اردو  |  Dec 03, 2022

Getty Images

 کیا آپ نے کبھی ایک ایسے واٹس گروپ کو اپنے آپ کو نوٹس بیجھنے کے لیے استعمال کیا ہے جو آپ چھوڑ چکے تھے؟

واٹس ایپ نے آپ کی بات سن لی ہے اور ایک ایسا فیچر متعارف کروایا ہے جس کے ذریعے آپ خود کو پیغامات بھیج سکتے ہیں اور ایپ میں ہی ایک نوٹس فائل رکھ سکتے ہیں۔

بزنس گروپ میٹا میں فیس بک اور انسٹاگرام کے علاوہ واٹس بھی شامل ہے۔ واٹس ایپ کا کہنا ہے کہ ’اپنے آپ کو پیغام بھیجنا عام بات چیت کرنے جیسا ہی ہو گا۔

تاہم آپ آڈیو اور ویڈیو کالز نہیں کر سکیں گے، نوٹیفیکیشن سائلینٹ نہیں کر سکیں گے، بلاک یا رپورٹ نہیں کر سکیں گے یا اپنا آن لائن سٹیٹس نہیں دیکھ سکیں گے۔‘  

Getty Imagesاسے استعمال کیسے کیا جائے؟

اگر آپ کے پاس اپ ڈیٹ شدہ ایپلیکیشن موجود ہے تو آپ کو صرف اپنے نمبر پر واٹس ایپ میسج بھیجنا ہو گا۔ آپ ایسا اپنے کانٹیکٹس کی فہرست میں اپنے نمبر کا انتخاب کرتے ہوئے کر سکتے ہیں یا پھر اپنا نمبر ایپ میں محفوظ کرنے کے بعد کر سکتے ہیں۔

میٹا نے اس حوالے سے تفصیل بتاتے ہوئے کہا ہے کہ صارفین دوسروں سے کی گئی گفتگو کو اس چیٹ میں شیئر کر سکیں گے اور آپ کے فون اور دونوں سرورز پر انکرپٹڈ ہی رہے گی۔

اب کچھ لوگوں کو یہ مسئلہ بھی درپیش ہو گا کہ وہ اپنے ساتھ کی گئی چیٹ تک آسانی سے رسائی کیسے حاصل کر سکتے ہیں۔  

اس کے لیے آپ ایک ایسا فیچر استعمال کر سکتے ہیں جو آپ کے فون میں تو موجود ہے لیکن آپ کو اس کے بارے میں علم نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیے

واٹس ایپ کے نئے فیچرز میں خاص کیا ہے؟

واٹس ایپ پر سات دن بعد میسجز ’غائب‘ کرنے والا فیچر متعارف

واٹس ایپ کی نئی حفاظتی پالیسی پر خدشات کے ساتھ ساتھ طنز و مزاح بھی

اگر آپ کے پاس ایک اینڈراؤڈ فون ہے تو اپنے ساتھ ہونے والی چیٹ کو دیر تک پریس کریں تو ’پن چیٹ‘ کا آپشن نمودار ہو گا۔

اگر آپ ایک آئی فون صارف ہیں تو چیٹ کو رائٹ سوائپ کریں اور آپ کو وہی آپشن نظر آئے گی۔

اس آپشن کے ذریعے آپ تین کے قریب چیٹس کو فہرست میں اوپر رکھ سکتے ہیں تاکہ آپ کو انھیں دوبارہ ڈھونڈنا نہ پڑے۔

واٹس ایپ لاطینی امریکہ سمیت دنیا بھر میں فوری میسجنگ کے لیے استعمال ہونے والی مقبول سروس ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More