گلوکار بلال مقصود نے وزیراعظم عمران خان سے کیا سوال کیا؟

بول نیوز  |  Sep 20, 2020

پاکستان کے اسٹرنگز بینڈ کے رکن اور نامور کمپوزر و گلوکار بلال مقصود نے وزیراعظم عمران خان سے سوال کر لیا۔

بلال مقصود نے وزیراعظم عمران خان سے پاکستان فلم انڈسڑی کی بحالی کے لیے تو اقدامات شروع کردیے ہیں لیکن میوز ک انڈسٹری کے لیے کونسے اقدامات کیے ہیں؟

بلال مقصود نے فوٹو اینڈ ویڈیو شیئرنگ ایپ انسٹاگرام پر اپنا ایک ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں اُنہوں نے کہا کہ میں نے اخبار میں ایک خبر پڑھی جس میں بتایا گیا تھا کہ حکومت نے فلم انڈسٹری کی بحالی کے لیے پیکیج کا اعلان کیا ہے۔

View this post on Instagram

#pmimrankhan #governmentofpakistan #pakistanimusicindustry #pakistanimusicians #meintudekhoonga #pakistaniculture

A post shared by Bilal Maqsood (@bilalxmaqsood) on Sep 19, 2020 at 9:03am PDT

گلوکار نے کہا کہ خبر دیکھ کر مجھے خوشی ہوئی کیونکہ یہ ہماری فلم انڈسڑی کی بحالی کے لیے بہترین اقدام ہے۔

بلال مقصود نے کہا کہ لیکن یہاں میرا ایک سوال ہے اور وہ یہ ہے کہ پاکستان میوزک انڈسٹری کے لیے کونسے اقدامات کیے جارہے ہیں؟

گلوکار نے کہا کہ ہمیں بتائیں کہ اس ملک میں گلوکاروں کی کیا اہمیت ہے کیونکہ ہماری عوام کا جو نظریہ ہے اُس کے مطابق موسیقی کی دُنیا سے تعلق رکھنے والے فنکاروں کو بُرا سمجھاجاتا ہے اور اُن کے لیے نامناسب الفاظ استعمال کیے جاتے ہیں۔

اُنہوں نے کہا کہ اگر ہماری حکومت کو لگتا ہے کہ گلوکاروں کے بارے میں عوام کا نظریہ اور سوچ بالکل درست ہے تو ہمیں بتائیں۔

دوسری جانب بلال مقصود نے کہا کہ اگر میں وزیراعظم عمران خان کی بات کروں تو مجھے نہیں لگتا اُن کی سوچ بھی عوام جیسی ہوگی کیونکہ عمران خان کی دوستی بڑے بڑے نامور موسیقاروں سے ہے اور مجھے یقین ہے کہ وہ ہمارے متعلق ایک مثبت سوچ رکھتے ہوں گے۔

گلوکار نے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ وزیراعظم عمران خان صاحب ایسے پلیٹ فارمز بنائیں جہاں عوام کی اس غلط سوچ کو تبدیل کیا جائے۔

اُن کا کہنا تھا کہ اگر میوزک انڈسٹری کی ترقی کے لیے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے تو وہ دن دور نہیں کہ جب اس ملک سے میوزک کا خاتمہ ہوجائے گا۔

بلال مقصود نے لکھا کہ مجھے لگتا ہے کہ اِس اہم مسئلے پر لازمی توجہ دی جانی چاہیے۔

واضح رہے کہ گلوکار بلال مقصود نے کہا کہ ملک میں مختلف پلیٹ فارمز کے ذریعے میوزک انڈسٹر ی کے لیے اقدامات کیے جائیں کیونکہ یہ بہت ضروری ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More