چوروں کی نماز جنازہ پر پابندی، جرگہ کیخلاف کارروائی ہوگی،پولیس

سماء نیوز  |  Jan 26, 2021

خیبرپختونخوا کے ضلع خیبر کے ضلعی پولیس آفیسر ڈاکٹر محمد اقبال نے کہا ہے چوروں کی نمازہ جنازہ نہ پڑھانے کا فیصلہ کرنے والے جرگہ ارکان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

اتوار کو خیبر کے صدر مقام باڑہ میں منعقدہ جرگے میں فیصلہ ہوا تھا کے علاقے میں چور کو دیکھتے ہی گولی مار دی جائے گی۔ اس کے لواحقین کو انتقام لینے کا حق حاصل نہیں ہوگا جبکہ مارے گئے چوروں کی نماز جنازہ میں بھی کوئی شرکت نہیں کرے گا۔

ضلعی پولیس آفیسر ڈاکٹر محمد اقبال نے کہا ہے کہ پوليس کی رٹ بحال کردی ہے۔ کسی کو اپنے فیصلے سنانے کا اختیار نہیں۔ جرگے کرنے والے اور اپنے فیصلے سنانے والوں کے خلاف کارروائی ہوگی۔

جرگہ کب اور کیوں ہوا

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ضلع خیبر کی تحصیل باڑہ میں کچھ عرصے سے چوروں نے لوگوں کا جینا حرام کر دیا ہے۔ اس سسلے میں مقامی عمائدین نے متعدد مرتبہ پولیس اور ضلعی انتظامیہ کی توجہ بھی دلائی مگر وارداتیں کم ہونے کے بجائے تیزی سے بڑھ رہی ہیں۔

آئے رات کی چوری ڈکیتی سے تنگ آکر مقامی قبیلہ سپاہ نے اتوار کو اسپین قبر کے مقام پر گرینڈ جرگہ منعقد کیا جس میں قبیلہ سپاہ کے تینوں ذیلی شاخوں کے مشران نے شرکت کی۔

جرگے میں متفقہ فیصلہ کیا گیا کہ چور کو دیکھتے ہی گولی ماری جائے گی جس کی کوئی ایف آئی آر درج نہیں ہوگی جبکہ اس کے خاندان والے اس قتل کا بدلہ نہیں لیں گے۔ چور کی نمازہ جنازہ پر مکمل پابندی ہوگی اور کوئی بھی چور کی نمازہ جنازہ میں شرکت نہیں کرے گا۔

اس موقع پر جرگے نے قبیلے کے چیدہ افراد پر مشتمل ایک کمیٹی بھی تشکیل دی ہے جو ان فیصلوں پر عملدرآمد یقینی بنائے گی اور اس سلسلے میں پولیس، ضلعی انتظامیہ سمیت دیگر اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ بات چیت کرے گی۔

کمیٹی کے ارکان میں ذیلی شاخ ورمزخیل سے ولت خان، تراب علی، افتخار آفریدی، ملک دین خیل، سید گل، جہانگیر، سید غنی اور آصف شامل ہیں۔ غیبی خیل قبیلے سے درستہ جان، سلطان اکبر، یار اکبر، گل خان اور حاجی فضل کریم جبکہ سوران خیل کی نمائندگی وارث خان، مہک شاہ، شیر محمد اور عمر خان کریں گے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More