جہانگیرترین کیخلاف اقدامات انصاف نہیں، عبدالحئی دستی

سماء نیوز  |  Apr 13, 2021

مشیر وزیراعلیٰ پنجاب عبدالحئی دستی کا کہنا ہے کہ جب واٹس اپ پر اسلام آباد سے میسجز آئیں گے کہ ہمیں ہر صورت جہانگیر ترین سلاخوں کے پیچھے چاہئیں تو یہ انصاف نہیں، جن کا پی ٹی آئی سے واسطہ نہيں تھا وہ مسلط ہوگئے، شہزاد اکبر اور اعظم خان پر ہر ايک کو تحفظات ہيں۔

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے مشیر وزیراعلیٰ پنجاب عبدالحئی دستی کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین کیخلاف اقدامات انصاف نہیں ہے، احتساب ہونا چاہئے مگر کسی کو ٹارگٹ نہیں کرنا چاہئے، جہانگیر ترین کیخلاف مقدمات میں چینی کا ذکر تک نہیں ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ جہانگیر ترین کی عدالت میں پچھلی پیشی کے وقت 8 ایم این ایز اور 21 ایم پی ایز ہمراہ تھے مگر اب تعداد بڑھ چکی ہے، آئندہ پیشی پر ان کے ہمراہ 45 اراکین اسمبلی ہوں گے، وزیراعظم کو چاہئے کہ جہانگیر ترین کو ملاقات کیلئے بلائیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب کے مشیر نے کہا کہ ایک بات واضح ہے کہ اگر ہمارے پاس 80 اراکین اسمبلی بھی ہوجائیں تو ہم پھر بھی تحریک انصاف کو نہیں چھوڑیں گے، علیم خان اور سبطین خان نے جیل جانے پر پارٹی نہیں چھوڑی مگر مایوس ہوگئے، اگر جہانگیر ترین جیل چلے گئے تو وہ بھی پارٹی نہیں چھوڑیں گے، وہ بھی پہلے کی طرح پارٹی کیلئے جدوجہد نہیں کرسکیں گے۔

وزیراعلیٰ پنجاب کی معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی پارٹیوں میں اختلاف رائے ہوتا ہے، جہانگیر ترین پارٹی کا حصہ ہیں، ہم ان کی خدمات کے معترف ہیں۔

جہانگیر ترین نے عمران خان کے نظریے کیلئے کوششیں کی ہیں، اگر کسی نے کسی کو میسجز کئے ہیں تو اس کی انکوائری ہونی چاہئے۔

ان کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین کو قانون سے ہٹ کر کوئی ریلیف تو نہیں ملے گا، حکومت نے کسی کو بھی سیاسی انتقام کا نشانہ نہیں بنایا، جہانگیر ترین کو اپنا مؤقف عدالتوں میں دینا ہے۔

فردوس عاشق اعوان نے مزید کہا کہ ن لیگ کو معلوم ہونا چاہئے جو شخص تنکا تنکا کرکے اپنا آشیانہ بناتا ہے وہ اس کو بکھرنے نہیں دیتا، جہانگیر ترین کبھی تحریک انصاف کو کمزور نہیں ہونے دیں گے۔

فردوس عاشق اعوان کا مزید کہنا تھا کہ جہانگیر ترین کے تحفظات سے متعلق پارٹی میں مشاورت جاری ہے، ان کے جائز تحفظات کو سننا چاہئے اور اگر جہانگیر ترین کی ے شکایت میں حقیقت ہوئی تو پارٹی کو اس پر نظرثانی کرنی چاہئے۔

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ سے متعلق فردوس عاشق نے کہا کہ مریم نواز کی ضد اور انا پر مبنی سیاست پہلے نواز شریف کو بند گلی میں لے گئی اور اب پی ڈی ایم کی سیاست دفن کردی۔

سماء کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنماء ن لیگ محمد زبیر کا کہنا تھا کہ حکومت نے پہلے اپوزیشن کو ٹارگٹ کیا تھا، اب اپنے لوگ ان کے نشانے پر ہیں، کوئی عمران خان سے اختلاف کرے تو عمران خان وہ برداشت نہیں کرسکتے، جہانگیر ترین کیخلاف اقدامات میں شاہ محمود قریشی اور شہزاد اکبر بھی ملوث ہیں۔

ترجمان مریم نواز محمد زبیر کا کہنا تھا کہ ہمیں اس میں دلچسپی ہے کہ جہانگیر ترین حکومت کو گرادے، فردوس عاشق کہہ رہی ہیں کہ جہانگیر ترین کے معاملے میں پارٹی میں مشاورت چل رہی ہے، اس کا مطلب ہے حکومت دو نمبر ہے، پہلے مقدمات درج کئے الزامات لگائے اور اب پیچھے ہٹ رہی ہے، اگر غلط کام کئے ہیں تو کیس چلنے دیں اور اگر نہیں کئے تو کارروائی کیوں کی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کے سارے ممبرز جہانگیر ترین کے پاس جائیں گے، جہانگیر ترین ہی پی ٹی آئی بن جائیں گے۔

بلاول بھٹو کے معافی مانگنے کے مطالبے پر تبصرہ کرتے ہوئے محمد زبیر کا کہنا تھا کہ ہم پیپلز پارٹی  سے معافی نہیں مانگیں گے، اگر پی ڈی ایم پارٹی نہیں تھی تو پھر اسٹرکچر کیوں بنایا گیا تھا، معافی کا مطالبہ مضحکہ خیز ہے، ہم اسے مسترد کرتے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More