ویکسین کی دو خوراکیں کورونا کی علامات زیادہ عرصہ رہنے کا خطرہ نصف کرتی ہیں: تحقیق

اردو نیوز  |  Jul 31, 2021

ایک حالیہ تحقیق بتاتی ہے کہ کورونا ویکسین کی دو خوراکیں لگوانے والے افراد کورونا وائرس کے پیدا کردہ نقصان دہ اثرات (لانگ کووڈ) سے دوسروں کی نسبت 50 فیصد زیادہ محفوظ ہوتے ہیں۔

عرب نیوز کی رپورٹ میں برطانوی ادارے کی تحقیق کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ’ویکسین کی دو خوراکیں لگوانے والے افراد چکر، چھاتی کا درد اور توجہ مرکوز کرنے جیسے (لانگ کووڈ) مسائل سے زیادہ محفوظ رہتے ہیں۔‘

سائنٹیفک ایڈوائزری گروپ فار ایمرجنسیز (ایس اے جی ای) نے برطانوی حکومت کے اعدادوشمار کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ ’ویکسین کی دو خوراکیں لینے والے تمام عمر کے افراد میں 28 روز بعد بھی علامات کی موجودگی دوسروں کی نسبت نصف رہ گئی۔‘

گروپ کے مطابق خواتین، بڑی عمر کے افراد اور موٹاپے یا زائد وزن کا شکار افراد میں یہ علامات بالخصوص چکر آنے کی شکایت طویل عرصہ رہ سکتی ہیں۔

اس اے جی اے نے مزید کہا کہ ’کورونا وبا کا شکار ہونے والے افراد میں 12 ہفتوں کے بعد بھی علامات کی موجودگی 2.3 تا 37 فیصد تک کا فرق رکھتی ہے، جو سائنس دانوں میں غیر یقینی کا باعث ہے۔

گروپ کے مطابق اسے تحقیق کے نتائج پر بھرپور اعتماد ہے جو بتاتی ہے کہ 1.2 فیصد نوجوان اور 4.8 فیصد درمیانی عمر کے افراد میں علامات پائی گئیں۔

برطانیہ کی ایک اور تحقیق کے مطابق مردوں اور عورتوں میں کورونا وبا کی سطح مختلف ہے۔ مردوں میں سانس کی دشواری، تھکن، سردی لگنا، بخار جب کہ خواتین میں بو کا ختم ہو جانا، چھاتی کا درد اور مستقل کھانسی کی شکایت زیادہ ہو سکتی ہے۔ 

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More