حکومت کی نا اہلیوں کی وجہ سے ایم ایل 1 منصوبے پرکام شروع نہیں ہو سکا، احسن اقبال

بول نیوز  |  Oct 19, 2021

پاکستان مسلم لیگ ن کے جنرل سیکٹری احسن اقبال نے کہا ہے کہ حکومت کی نا اہلیوں کی وجہ سے آج تک ایم ایل 1 منصوبے پرکام شروع نہیں ہو سکا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن کے جنرل سیکٹری احسن اقبال نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک پیغام میں کہا کہ یہ ML-1 کراچی تا پشاور-طورخم #CPEC ریل منصوبہ ہے جس کے معاہدے پہ 2017 میں مسلم لیگ ن کے دور میں دستخط ہوئے، موجودہ حکومت کی پالیسیوں اور نا اہلیوں کی وجہ سے آج تک کام شروع نہیں ہو سکا۔

یہ ML-1 کراچ تا پشاور-طورخم #CPEC ریل منصوبہ ہے جس کے معاہدے پہ 2017 میں مسلم لیگ ن کے دور میں دستخط ہوئے اور موجودہ حکومت کی پالیسیوں اور نا اہلیوں کی وجہ سے آج تک کام شروع نہیں ہو سکا- pic.twitter.com/g4s5qc1l94

— Ahsan Iqbal (@betterpakistan) October 19, 2021

واضح رہے اس سے قبل  وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ایم ایل ون  منصوبے کے حوالے سے اجلاس ہوا تھا جس میں  شیخ رشید احمد، اسد عمر اور  ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ ،چیئرمین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ اور دیگر سینئرافسران  شریک ہوئے تھے۔

وزیر اعظم کو ایم ایل ون منصوبے، منصوبے پر عمل درآمد کے حوالے سے مقرر کردہ ٹائم لائنز اور اب تک ہونے والی پیش رفت اور منصوبے کے ثمرات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی تھی۔

اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیراعظم  عمران خان کا کہنا تھا کہ ایم ایل ون منصوبہ سی پیک کا سب سے اہم اور کلیدی منصوبہ ہے، ایم ایل ون منصوبے سے ریلوے کا نظام جدید اور مضبوط ہوگا۔

وزیراعظم   کا کہنا تھا کہ اس  منصوبے پر عمل درآمد سے ہنرمندوں اور تربیت یافتہ افراد کے لیے نوکریوں کے ہزاروں مواقع پیدا ہوں گے اور صنعتی عمل کو فروغ ملے گا۔

عمران خان نے کہا تھا  کہ   ایم ایل ون منصوبے سے عوام کو سفر اور مال برداری کی بہتر سہولیات میسر آئیں گی۔ایم ایل ون منصوبے سے کاروباری برادری کے لیے جہاں کاروبار میں آسانیاں پیدا ہوں گی وہاں کاروباری لاگت میں واضح کمی واقع ہوگی۔

وزیراعظم  عمران خان  کا  مزید کہنا تھا کہ ایم ایل ون منصوبے سے سماجی و معاشی ترقی کا نیا باب روشن ہوگا۔ترقیاتی منصوبوں کی ترجیحات کے تعین میں ہمارے پیش نظر عوام کی فلاح و بہبود اور ملک کی ترقی ہے۔

Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More