مولانا فضل الرحمان کا پی ڈی ایم رہنماؤں سے ٹیلی فونک رابطہ

بول نیوز  |  Oct 27, 2021

 مولانا فضل الرحمان نے پی ڈی ایم رہنماؤں سے ٹیلی فونک رابطہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پی ڈی ایم رہنماؤں کے سامنے بلدیاتی انتخابات میں حصہ نہ لینے کی تجویز پیش کی۔

ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان نے پی ڈی ایم رہنماؤں کو بلدیاتی انتخابات کا بائیکاٹ کرنے کی تجویز دیتے ہوئے کہاکہ بلدیاتی انتخابات کی بجائےعام انتخابات کی طرف جانا چاہیئے۔

مولانا فضل الرحمان نے قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف ، محمود خان اچکزئی اور اختر مینگل سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا۔

اس کے ساتھ ساتھ پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے آفتاب شیر پاؤ اور پی ڈی ایم میں شامل دیگر جماعتوں کے قائدین سے بھی رابطہ کرکے  بلدیاتی انتخابات میں حصہ نہ لینے کی تجویز پیش کی۔

واضح رہےکہ پی ڈی ایم نئے وزیراعلیٰ بلوچستان کو ووٹ دے گی یا نہیں؟ اس حوالے سے بھی گزشتہ روز مولانا فضل الرحمان کا بیان سامنے آ یا تھا۔

ذرائع کے مطابق جے یو آئی ف، بی این پی مینگل اور پختونخواہ میپ نے اس حوالے سے مشاورت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

 مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہےکہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) میں شامل جماعتوں سے مشاورت کے بعد نئے وزیراعلیٰ بلوچستان کی حمایت کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کریں گے۔

سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان نے کہاکہ پیپلزپارٹی نے بی اے پی سے چھپ کر ووٹ لیا تھا ، ہم چھپ کر ووٹ دینے والے نہیں۔

انہوں نے کہاکہ جو بھی فیصلہ ہوگا مشاور ت سے اور اعلانیہ ہوگا ، ہم نے بلوچستان کی نئی حکومت میں شامل ہونے کا ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہےکہ جام کمال خان کے اپنے ساتھی ان کے خلاف ہوگئے تھے ، جب بی اے پی کے اپنے ارکان جام کمال کو چھوڑ چکے تھے تو ہم تو تھے ہی اپوزیشن میں، بلوچستان میں ہم نے حکومتی اتحاد میں اختلافات کا فائدہ اٹھایا۔

سربراہ پی ڈی ایم  نے کہاکہ بلوچستان میں ہمارے ساتھ اپوزیشن میں پی ڈی ایم کی دو جماعتیں بی این پی مینگل اور پختونخواہ میپ بھی ہیں، ہم پی ڈی ایم کی جماعتوں سے مشاورت کے بعد ہی کوئی بھی فیصلہ کریں گے۔

 

Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More