پیٹرول پمپس کی ہڑتال:بڑی کمپنیوں کے پمپس کھلے رہیں گے

سماء نیوز  |  Nov 25, 2021

پاکستان پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشنز نے جمعرات سے غیر معینہ مدت کیلئے پیٹرول پمپس بند رکھنے کا اعلان کردیا تاہم پاکستان اسٹیٹ آئل، شیل پاکستان، ٹوٹل پارکو، ہیسکول اور گو پیٹرولیم کی جانب سے کہا گیا کہ ہڑتال کے دوران تمام پیٹرول پمپس کھلے رہیں گے۔ دوسری جانب اوگرا نے پیٹرول پمپس پر پیٹرولیم مصنوعات کی فراہمی میں تعطل کا نوٹس لیتے ہوئے تمام آئل مارکیٹنگ کمپنیز کو بلاتعطل فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت کردی، ساتھ ہی مانیٹرنگ کیلئے انفورسمنٹ ٹیمیں بھی تشکیل دیدیں۔

پاکستان پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن (پی پی ڈی اے) نے کم منافع مارجن کے باعث 25 نومبر سے ملک بھر میں غیر معینہ مدت کیلئے ہڑتال کا اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ جمعرات کی صبح 6 بجے سے صرف ایمبولینسوں کو پیٹرول فراہم کیا جائے گا، جس کے نتیجے میں لوگوں کی بڑی تعداد پیٹرول کی قلت کے خوف سے گاڑیوں میں پیٹرول بھروانے پمپس پہنچ گئی ہے۔

پیٹرول پمپز مالکان کا کہنا ہے کہ منگل سے پمپس پر بڑی تعداد میں لوگ پیٹرول خریدنے آرہے ہیں کیونکہ جمعرات کو صبح 6 بجے سے عوام کو پیٹرول دستیاب نہیں ہوگا۔

 پیٹرول پمپ مالک محمد شعیب سرور نے کہا کہ وہ پنجاب میں واقع دو پٹرول پمپوں کے مالک ہیں اور پیٹرولیم ڈیلرز کی ہڑتال کے باعث اُن کے دونوں پمپز بند رہیں گے۔

 سرور نے کہا کہ 5 فیصد پیٹرول پمپ مالکان کی پیٹرول کی فروخت زیادہ ہے اور وہ کافی منافع کما رہے ہیں، ممکن ہے کہ وہ مالکان پیٹرول پمپس بند نہ کریں تاہم پیٹرول پمپ بند کرنے کے حوالے سے اُن مالکان سے بات چیت جاری ہے۔

 پاکستان پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے انفارمیشن سیکریٹری خواجہ عاطف احمد نے کہا کہ چونکہ حکومت نے ابھی تک ہمارے مارجن میں اضافہ نہیں کیا، ہم جمعرات سے غیر معینہ مدت تک ملک بھر میں ہڑتال کریں گے اور جمعرات سے صرف ایمبولنسز ہی پیٹرول خرید سکیں گی۔

پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او)، شیل پاکستان، ٹوٹل پارکو، ہیسکول اور گو پیٹرولیم (گیس اینڈ آئل پاکستان لمیٹڈ) کی جانب سے جاری اعلامیوں میں کہا گیا ہے کہ پیٹرولیم ایسوسی ایشن کی ہڑتال کے موقع پر تینوں کمپنیوں کی ملکیت پیٹرول پمپس کھلے رہیں گے۔

پی ایس او نے اس حوالے سے کمپنی کی زیر ملکیت چلنے والے پیٹرول پمپس کی فہرست بھی جاری کی ہے جس کے مطابق ملک بھر میں ایسے پمپس کی تعداد صرف 23 ہے، جن میں سے سب سے زیادہ 7 پمپس کراچی میں ہیں۔

ترجمان وزارت پیٹرولیم کا کہنا ہے کہ پیٹرول پمپ ڈیلرز کا مارجن بڑھانے کیلئے کیس ای سی سی بھجوادیا، آئل مارکیٹنگ کمپنیز اور ڈیلرز مارجن میں مناسب اضافے کیلئے کوشاں ہیں، وفاقی کابینہ کے ذریعے 10 روز میں فیصلے کا امکان ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ کل (جمعرات کو) ملک میں پی ایس او، شیل، ٹوٹل اور دیگر کمپنیز کے پمپ کھلے رہیں گے، آئل سپلائی میں مستعدی کیلئے ٹینکروں کو روانہ کردیا گیا ہے۔

پیٹرول پمپس پر پیٹرولیم مصنوعات کی سپلائی میں ممکنہ تعطل پر اوگرا نے نوٹس لیتے ہوئے آئل مارکیٹنگ کمپنیز کو بلاتعطل فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔

اوگرا نے پیٹرول پمپس کی مانیٹرنگ کیلئے انفورسمنٹ ٹیمیں تشکیل دیدیں۔ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی کا کہنا ہے کہ تمام پیٹرول پمپس پر پیٹرولیم مصنوعات کی بلاتعطل فراہمی یقینی بنائی جائے، سپلائی میں تعطل پیدا کرنے والوں کیخلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی جانب سے ہڑتال کے اعلان کے بعد بڑی پیٹرولیم کمپنی نے اپنے پمپس کھلے رکھنے کی یقین دہانی کرائی ہے تاہم کراچی، لاہور، اسلام آباد سمیت بڑے شہروں میں پیٹرول پمپس پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں، جن میں موٹر سائیکلیں، رکشہ، کاریں اور دیگر گاڑیاں شامل ہیں، بوتلوں میں پیٹرول لینے والوں کی بھی لائنیں لگی ہوئی ہیں۔

 واضح رہے کہ پیٹرولیم ڈیلرز نے حکومت کی جانب سے مارجن نہ بڑھائے جانے پر 5 نومبر کو ملک بھر میں ہڑتال کرنے کی دھمکی دی تھی جس کے بعد وزیر توانائی حماد اظہر کی سربراہی میں ایک حکومتی ٹیم نے پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن سے ملاقات کی اور چند دنوں میں پیٹرولیم مصنوعات کی فروخت پر مارجن بڑھانے پر رضامندی ظاہر کی تھی۔

جبکہ اقتصادی امور کے وزیر عمر ایوب کی سربراہی میں 22 نومبر کو ہونے والے اقتصادی رابطہ کمیٹی اجلاس میں آئل مارکیٹنگ کمپنیوں اور آئل ڈیلرز کے منافع میں اضافہ کرنے کا فیصلہ مؤخر کر دیا گیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More