افغان طالبان کے امیر ملا ہبت اللہ کتنی تنخواہ لیتے ہیں؟

بول نیوز  |  Dec 05, 2021

افغانستان کی وزارت خزانہ نے طالبان امیر ملا ہبت اللہ سمیت تمام وزرا اور حکام کی نئی تنخواہوں کا اعلان کردیا ہے۔متع

افغانستان کی وزارت خزانہ کے ترجمان احمد ولی حقمل نے اپنے بیان میں کہا کہ گزشتہ حکومت میں تنخواہوں کا نظام غیر منصفانہ تھا، مختلف اداروں اور محکموں کی تنخواہیں مختلف تھیں، اس لئے تنخواہوں میں تبدیلی ناگریز تھی۔

متعلقہ خبر: افغانستان میں 10 لاکھ بچوں کی ہلاکت کا خدشہ

احمد ولی حقمل نے کہا کہ تنخواہوں کے نظام کو بہتر بنانے کے لیے اعلیٰ افسران اور وزیروں کی تنخواہیں کم کی جارہی ہیں۔

افغان محکمہ خزانہ کے مطابق ملک میں سب سے زیادہ تنخواہ طالبان کے امیر ملا بہت اللہ کی رکھی گئی ہے، جو 2 لاکھ 28 ہزار 750 افغانی ہے، افغانستان کے وزیر اعظم کی تنخواہ ایک لاکھ 98 ہزار 250 افغانی، وزرا کی تنخواہ ایک لاکھ 37 ہزار 250 افغانی اور صوبائی گورنرز کی تنخواہ 91 ہزار 500 افغانی ہے۔

متعلقہ خبر: یورپی ملکوں کا افغانستان میں مشترکہ سفارتی مشن کھولنے پر غور

اعلیٰ سرکاری افسران کی تنخواہیں 25 ہزار 200 سے 30 ہزار 500 افغانی جب کہ نچلے درجے کے ملازمین کی تنخواہیں 2 ہزار 600 سے 16 ہزار 600 افغانی ہوگی۔

افغان حکومت کے نائب ترجمان انعام اللہ سمنگانی نے کہا کہ جو لوگ محکمہ تعلیم میں کام کرتے ہیں اور انہیں ماہرین تعلیم سمجھا جاتا ہے، ان کے پاس کچھ اضافی چیزیں ہیں۔

واضح رہے کہ رواں برس اگست میں طالبان نے ایک مرتبہ پھر اقتدار حاصل کیا تھا، جس کے بعد عالمی طاقتوں اور اداروں نے افغانستان کے اربوں ڈالر کے اثاثے منجمد کردیئے، مالی مشکلات کا شکار طالبان حکومت سرکاری ملازمین کو تنخواہیں بھی ادا نہیں کرسکتی۔

Square Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More