سری لنکا میں دوسری بار ہنگامی حالت نافذ

سماء نیوز  |  May 07, 2022

سری لنکا میں تیل اورخوراک کی شدید کمی کے بعد ملک بھر میں ہنگامے جاری ہیں اور ملک میں دوسری بار ہنگامی حالت نافذ کردی گی ہے۔

سری لنکا کی سیاسی صورتحال ابتر ہونے کےبعد ملک انتشارکی جانب بڑھ رہا ہے۔ کئی شہروں میں ہنگاموں کے بعد صدر نے 5 ہفتوں میں دوسری بار ہنگامی حالت نافذ کردی ہے۔

ملک میں عوامی مظاہرے جاری ہیں اورصدر سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔ عوام کا کہنا ہے کہ موجودہ معاشی صورتحال کے ذمہ دار صدر ہیں۔

دوسری جانب صورتحال یہ ہے کہ ملک کے کئی مقامات پر کہیں تیل اور خوراک دستیاب نہیں۔

صورت حال یہاں تک کیسے پہنچی؟واضح رہے کہ کووڈ 19 کی وبا سری لنکا کی سنگین معاشی حالت کے لیے ذمہ دار ہے کیونکہ اس نے اس کی سیاحت کے شعبے پر شدید اثر ڈالا ہے۔ ساتھ ہی کئی ماہرین اقتصادیات کا کہنا ہے کہ حکومت کی بدانتظامی اور مسلسل قرضے لینے کی وجہ سے اتنی بری صورت حال پیدا ہوئی ہے۔

سری لنکا نے زرمبادلہ بچانے کے لیے مارچ سنہ 2020 میں درآمدات پر پابندی عائد کی تھی اور اس کے ذریعے غیر ملکی قرضوں کی ادائیگی کے لیے 51 ارب ڈالر کی بچت کی تھی۔ اس کے ساتھ ہی حالیہ دنوں میں سری لنکا میں ڈیزل کی قلت کے باعث کھلبلی مچی ہوئی ہے۔ ملک کے کئی شہروں میں مظاہرے ہوچکے ہیں ۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More