پاکستانی جھنڈے کا ڈیزائن طے ہو گیا

بی بی سی اردو  |  Aug 05, 2020

(پندرہ اگست تک آپ ہر روز تین اخبارات ڈان، دی ہندوستان ٹائمز اور ایسٹرن ٹائمز میں 70 برس پہلے شائع ہونے والےخبروں کا خلاصہ یہاں پڑھ سکیں گے)

پاکستانی عملے کی آمد شروع

پاکستان کے دو مزید وزیر مسٹر عبدالرب نشتر اور جوگندر ناتھ منڈل بذریعہ فرنٹیر میل کراچی کے لیے روانہ ہو گئے۔ مسٹر غضنفر علی خان دو روز پہلے ہی روانہ ہو گئے تھے۔ خیال ہے مسٹر محمد علی جناح اور دیگر وزارء سات اگست تک روانہ ہوں گے۔

’تقسیم کے زخم کی چبھن 70 برس بعد بھی کم نہ ہو سکی‘

'گلوب' کو ایک انٹرویو میں مسٹر نشتر نے پاکستان اور ہندوستان کے کچھ مشترکہ مسائل کا ذکر کیا جن کے بارے میں انھوں نے کہا کہ دونوں ممالک کو مل کر مذاکرات کے ذریعے انہیں حل کرنا ہو گا۔ انھوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ پاکستان بننے کے بعد ہندوستان میں کچھ تلخیاں اب بھی موجود ہیں۔

پاکستان کے اکیس محکموں کا عملہ جس کی کل تعداد 600 ہے اور 90خاندانوں پر مشتمل ہےنئی دلی سے خصوصی ٹرین کے ذریعے کراچی پہنچ گیا۔

مصدقہ ذرائع سے معلوم ہوا کہ پاکستانی جھنڈے کا ڈیزائن طے ہو گیا ہے۔ اطلاعات ہیں کہ یہ بھی سوچا جا رہا ہے کہ جھنڈے کی اندرونی طرف بھی ایک گہرے سبز رنگ کی پٹی ہونی چاہیے تاکہ سفید رنگ مزید نمایاں ہو جائے۔

مسلم خواتین کا مطالبہ

پشاور میں مسلم لیگ کی اراکین نے ایک قرارداد میں فرنٹیئر صوبے کی خواتین کے لیے پاکستان کی آئین ساز اسمبلی میں ایک نشست کا مطالبہ کیا ہے۔

پاکستان سپیشل ٹرین

پاکستان کی حکومت کے عملے اور ان کے اہل خانہ کو لے کر آنے والی پاکستان سپیشل ٹرین جب کراچی پہنچی تو دس ہزار لوگوں نے اس کا استقبال کیا۔

سٹاپ پریس

ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ لائل پور نے ریک بازار میں چھرا گھونپنے کی ایک واردات کے بعد شہر کی میونسپل حدود میں 16 گھنٹے کا کرفیو لگانے کا اعلان کیا ہے۔

پنجاب باؤنڈری فورس

دونوں ممالک کی حکومتوں کی رضامندی سے پنجاب کے 12 متنازع اضلاع کے لیے پنجاب باؤنڈری فورس کے نام سے خصوصی فورس قائم کی گئی ہے۔

دو اعلیٰ فوجی افسر جن میں پاکستان کی طرف سے بریگیڈیئر محمد ایوب خان اور انڈین یونین کی طرف سے بریگیڈیئر دگمبر سنگھ برار کو اس فورس کے لیے میجر جنرل ریس کا مشیر مقرر کیا گیا ہے۔

یہ فورس لاہور، امرتسر، گورداسپور، ہوشیارپور، جالندھر، لدھیانہ، فیروزپور، منٹگمری، لائل پور، شیخوپورہ، گوجرانوالہ اور سیالکوٹ میں تعینات کی جائے گی۔

گجرات اور کاٹھیاوار میں بھوک کے شکار لوگوں کا احتجاج اور اناج کے لیے فسادات

کاٹھیاوار کے کچھ دیہات میں اناج کی تلاش میں مسلح گروہ باہر آئے۔ ایک گاؤں میں لوگوں نے اناج کے ایک تاجر کو ذخیرہ کیا ہوا اناج حوالے نہ کرنے پر ہلاک کر دیا۔

علاقے میں ایک سرکاری اہلکار نے اناج کے ایک تاجر کو اپنا مال ایک کو آپریٹو سوسائٹی کے حوالے کرنے کا حکم دیا اور مزید کارروائی کا وعدہ کیا۔

رام پور میں کشیدگی

رام پور میں چند غنڈہ عناصر کی کارروائیوں کے نتیجے میں صورتحال کشیدہ ہے۔ بظاہر اس کے پیچھے وہ سیاسی گروپ ہیں جو ریاست کو انڈیا کا حصہ نہیں بننے دینا چاہتے۔

نوٹ یہ تحریر بی بی سی اردو پر پانچ اگست 2017 کو بھی چھپ چکی ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More