انڈیا: گاؤں کی پنچایت کی سربراہ پر 30 آوارہ کتے مارنے کا مقدمہ

اردو نیوز  |  Dec 08, 2022

انڈین ریاست تامل ناڈو کی پولیس نے ایک گاؤں میں 30 آوارہ کتوں کی لاشیں پائے جانے پر پنچایت کی سربراہ اور اس کے خاوند پر مقدمہ درج کیا ہے۔

انڈیا ٹو ڈے کے مطابق یہ واقعہ وریدھو نگر کے گاؤں شنکرالینگا پورم میں پیش آیا۔ کتوں کی ہلاکت کی اطلاع جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والی سماجی کارکن سی سنیتھا کو ملی۔

انہوں نے گاؤں کی پنچایت کی سربراہ ناگا لکشمی سے رابطہ کیا، لیکن فون ان کے شوہر نے سنا جنہوں نے بتایا کہ وہ پنچایت کے صدر ہیں۔

انہوں نے تسلیم کیا ان کتوں کو گاؤں کے لڑکوں نے ہلاک کیا کیونکہ وہ کتے پاگل تھے اور گاؤں کے لوگوں کے لیے مصیبت بنے ہوئے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ سکول کے بچے اور دیگر لوگ ان کی وجہ سے مسلسل مسائل کا سامنا کر رہے تھے۔

سماجی کارکن نے امتور پولیس سٹیشن میں درخواست دی کہ بہت سے کتوں کو مار کر دفن کر دیا گیا ہے۔ پولیس کو تحقیقات میں معلوم ہوا کہ تقریباً 30 کتوں کو سنیچر کو مار کر گاؤں کے باہر دفن کیا گیا تھا۔

مبینہ طور پر کتوں کو لوہے کے تاروں کے ذریعے پکڑا گیا اور پھر انہیں مار مار کر ہلاک کیا گیا۔

پولیس نے پنچایت کی سربراہ اور ان کے خاوند کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More