فرانس میں مسلمانوں کی زندگی اجیرن ہونے لگی

بول نیوز  |  Nov 22, 2020

فرانسیسی صدر میکرون نے مسلم رہنماؤں کو مہلت دی ہے کہ وہ پندرہ دن کے اندر جمہوری اقدار کے چارٹر کو مان لیں اور ایسا نہ کرنے کی صورت میں سخت اقدامات کا فیصلہ بھی سنا دیا۔

اسی چارٹر کے تحت مسلم نمائندہ تنطیم سی ایف سی ایم نے اس بات پر رضامندی ظاہر کی ہے کہ وہ نیشنل کونسل آف امام قائم کرے گی جو کہ ملک میں امام کے لیے باضابطہ اجازت نامے جاری کرے گی اور ان اجازت ناموں کو واپس بھی لے سکے گی۔

ان اقدامات میں ایک ایسا بِل شامل ہے جس نے مسلمانوں کی ذاتی زندگی کو بھی متاثر کردیا ہے،جن میں  گھر پربچوں کو پڑھانے پر پابندی لگائی جارہی ہے۔

بچوں کو شناختی نمبر دیا جائے گا جس کے تحت اس بات کی نگرانی کی جا سکی گی کہ وہ اسکول جا رہے ہیں اور جو والدین قانون کی خلاف ورزی کریں گے ان پر بھاری جرمانے لگائے جائیں گے اور چھ ماہ کی جیل بھی ہو سکتی ہے۔

-->
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More