بھارت:گِدھوں کے تحفظ کا منصوبہ

ڈی ڈبلیو اردو  |  Feb 23, 2021

بھارت میں حکومت نے گِدھوں کے تحفظ کے لیے 207 کروڑ روپے کے لاگت سے ایک پانچ سالہ منصوبہ تیار کیا ہے تاکہ مردہ جانوروں کو کھا کر ماحول کو آلودگی سے بچانے والے اس پرندے کو معدوم ہونے سے بچایا جاسکے۔

انٹرنیشنل یونین فار کنزرویشن آف نیچر (آئی یو سی این) کی ایک رپورٹ کے مطابق مختلف اسباب کی بنا پر بھارت میں گِدھوں کی تعداد میں مسلسل کمی ہوتی جارہی ہے۔ گزشتہ صرف ایک عشرے کے دوران تقریباً دو سے چار کروڑ کے قریب گِدھ مرچکے ہیں اور اب ان کی تعداد صرف چند ہزار رہ گئی ہے جبکہ ان کی تین اقسام کو 'انتہائی کمیاب‘ نسلوں میں شامل کیا گیا ہے۔

ڈائیکلوفیناک سب سے بڑی دشمن

ماہرین کہتے ہیں کہ ڈائیکلوفیناک نامی دوا گِدھوں کی سب سے بڑی دشمن ہے۔ یہ دوا جانوروں میں درد، سوزش کے علاج اور اسٹرائیڈ کے طورپرانجکشن کے ذریعہ دی جاتی ہے۔ سن  2006 ء میں ایک رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ ڈائیکلو فیناک کی وجہ سے بھارت، پاکستان، نیپال اور بنگلہ دیش میں ایک عشرے کے دوران گِدھوں کی تعداد میں پچانوے فیصد سے زیادہ کمی واقع ہوگئی ہے۔ رپورٹ سے یہ بھی پتا چلا کہ جن گِدھوں کی موت ہوئی تھی انہوں نے ان مردہ جانوروں کو کھا کر اپنی بھوک مٹائی تھی۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More