ویب سیریز دھوپ کی دیوار پر پابندی کا مطالبہ کیوں؟

سماء نیوز  |  Jun 18, 2021

ٹی وی اسکرین اور حقیقی زندگی کی مقبول ترین شوبز جوڑی کا اعزاز رکھنے والے احد رضا میر اور سجل علی کی ویب سیریز دھوپ کی دیوار کا ٹریلر ریلیز ہوتے ہی تنقید کا شکار ہوگیا ۔

ویب سیریز دھوپ کی دیوار 25 جون کو بھارتی اسٹریمنگ پلیٹ فارم زی فائیو پر ریلیز ہورہی ہے جس کا ٹریلر گزشتہ دنوں ریلیز کیا گیا تاہم اب سوشل میڈیا پر اس ویب سریز پر پابندی لگانے کا مطالبہ سامنے آگیا ۔ معروف ڈرامہ اور ناول نگار عمیرہ احمد کی تحریر کردہ کہانی پر بنی ویب سیریز دھوپ کی دیوار کی ہدایات حسیب حسن نے دی ہیں جو حقیقی واقعات سے متاثر ہوکر بنائی گئی۔

A post shared by ZEE5 (@zee5)

ویب سیریز کی کہانی پاکستان اور بھارت کے 2 خاندانوں کے گرد گھومتی ہے۔تاہم دھوپ کی دیوارکا ٹیزر اور بعدازاں ٹریلر ریلیز ہونے کے بعد سے اس کی کہانی تحریر کرنے والی معروف ناول و ڈٖراما نگار عمیرہ احمد کو شدید تنقید کا سامنا ہے۔

سوشل میڈیا صارفین نے انڈین ویب اسٹریمنگ پلیٹ فارم پرعمیرہ احمد کی لکھی گئی ویب سیریز ‘دھوپ کی دیوار’ کا ٹریلر ریلیز ہونے کے بعد بے پناہ تنقید کی۔ کچھ لوگوں نے ڈرامے کی مصنفہ پر غداری اور ملک دشمنی کا الزام بھی عائد کر ڈالا کیونکہ یہ ڈرامہ پاکستان میں نہیں بلکہ انڈیا کے ویب اسٹریمنگ پلیٹ فارم ‘زی فائیو’ پر آن ائیر ہونا ہے۔

ویب سیریز میں حقیقی زندگی کا یہ جوڑا 2 ایسے نوجوانوں کا کردارادا کررہا ہے جو سرحدوں کے لحاظ سے الگ الگ لیکن مقبوضہ کشمیرکے حوالے سے جاری تنازعات میں اپنے اپنے والد کو کھونے کے غم کے حوالے سے ایک ہیں، دونوں کے والد انڈیا اور پاکستان کے فوجی ہیں اور دونوں انڈیا اور پاکستان کی سرحد پر جاری کشیدگی کے دوران مارے جاتے ہیں۔

مصنفہ عمیرہ احمد نے انڈین ویب اسٹریمنگ پلیٹ فارم کے لیے ویب سیریز لکھنے پر ‘غدار’ اور ‘ملک دشمن’ کہلائےجانے پر وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ دھوپ کی دیوار نامی ویب سیریز پر انھوں نے جنوری سن 2019 میں کام کرنے کا آغاز کیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کو اس کی پوری کہانی بھیجی گئی تاکہ اگر کوئی قابل اعتراض مواد ہو تو اسے ایڈٹ کر دیا جائے۔

View this post on Instagram A post shared by Umera Ahmed Official (@umeraahmed.official)

مصنفہ کا دعوی ہے کہ اس موضوع کو آئی ایس پی آر نے اوکے کر دیا تھا اور اس کے ساتھ ساتھ انھیں راولپنڈی بلا کر ان سے میٹنگ بھی کی گئی اور کہا گیا کہ انڈیا پاکستان کے تعلقات پر فوج کا بھی یہی اسٹانس ہے۔

عمیرہ احمد کا کہنا تھا کہ یہ ڈرامہ کسی انڈین چینل کے لیے نہیں لکھا گیا تھا، ’دھوپ کی دیوار‘ سمیت تین ڈرامے گروپ ایم نامی پروڈکشن کمپنی کے ساتھ 2018 میں سائن کیے تھے جو کہ ایک پاکستانی کونٹینٹ کمپنی ہے۔

عمیرہ احمد کا کہنا تھا کہ گروپ ایم نے ان میں سے دو پروجیکٹ ‘الف’ اور ‘لعل’ پاکستانی نجی چینل کو بیچے اور دو پروجیکٹ انٹرنیشنل پلیٹ فارم کو بیچنے کی کوشش کی، جن میں زی فائیو ، نیٹ فلکس اور چند دیگر فارم شامل ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ان کے متعدد ڈرامے عنقریب پاکستانی چینلوں پر بھی ریلیز ہو رہے ہیں اور اگر کسی پاکستانی مصنف کے کام کو بین الاقوامی سطح پرپذیرائی ملتی ہیں تو یہ ان کی نظر میں اچھی بات ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More